Tuesday - 2018 Nov 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183519
Published : 22/9/2016 14:34

میانمار میں تین ھزار مسجدیں اور مراکز مسمار ہونے کی زد پر

میانمار میں آراکان کی صوبائی حکومت کے حکام نے کہا ہے کہ مسلمانوں کی تین ھزار سے زائد مسجدیں اور مذھبی مراکز کو مسمار کر دیا جائے گا۔


فیکٹ خبر ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق آراکان کی صوبائی حکومت کے حکام نے بدھ کے روز اعلان کیا ہے کہ مسلمانوں کی جو مساجد اور مذھبی مراکز غیرقانونی طور پر تعمیر کیے گئے ہیں،انھیں گرا دیا جائے گا،اس رپورٹ کے مطابق،بہت جلد ہی اس حکم پر عمل در آمد شروع کر دیا جائے گا۔
میانمار کے مختلف علاقوں میں تھوڑے تھوڑے عرصے کے بعد بدھشٹوں اور مسلمان اقلیت کے درمیان خاص طور پر مذھبی عمارتوں کے مسئلے پر کشیدگی پیدا ہو جاتی ہے جس سے مسلمان کمیونٹی کو سخت نقصان پہنچتا ہے اور ان کے مذھبی مراکز، مساجد اور دینی مدارس کو تباہ کر دیا جاتا ہے۔
جولائی کے مہینے میں بھی انتہا پسند بدھشٹوں نے صوبہ راخین کے ایک گاؤں میں مسلمانوں کی ایک مسجد کو آگ لگا دی تھی،اور یہ واقعہ اس وقت پیش آیا کہ جب چند روز قبل علاقے کے حکام نے مسجد کی عمارت کے غیرقانونی ہونے کے بہانے اس مسجد کو گرانے کا حکم اس کے متولیوں کے حوالے کیا تھا۔
سحر ٹی وی


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Nov 20