Tuesday - 2018 Nov 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183525
Published : 22/9/2016 19:13

غدیر اور تصور ولایت

پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے خدا کے حکم کی پیروی اور قرآن مجید کے واضح حکم کی تعمیل کرتے ہوئے ایک اہم ترین فریضہ ادا کیا:«و ان لم تفعل فما بلغت رسالته» امیر المومنین(ع) کو ولایت و خلافت کے عہدے پر متعین کرنا اتنا اہم ہے کہ اگر تم نے یہ کام نہ کیا تو کار رسالت انجام ہی نہیں دیا۔


غدیر کے موضوع میں،پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے خدا کے حکم کی پیروی اور قرآن مجید کے واضح حکم کی تعمیل کرتے ہوئے ایک اہم ترین فریضہ ادا کیا:«و ان لم تفعل فما بلغت رسالته» امیر المومنین(ع) کو ولایت و خلافت کے عہدے پر متعین کرنا اتنا اہم ہے کہ اگر تم نے یہ کام نہ کیا تو کار رسالت انجام ہی نہیں دیا! یا پھر اس سے یہ مراد ہے کہ اس سلسلے میں اپنی ذمہ داری پوری نہيں کی کیونکہ خداوند عالم نے حکم دیا ہے کہ اس کام کو کرو،یا اس سے بڑھ کر یہ کہ اس کام کو انجام نہ دینے کی صورت میں، پیغمبر اعظم(ص) کی رسالت ہی کو خطرہ لاحق ہو جائے گا اور اس کے ستون متزلزل ہو جائيں گے،اس سے یہ بھی مراد ہو سکتا ہے، گویا اصلی ذمہ داری پوری ہی نہيں کی گئ! اس بات کا بھی امکان ہے کہ اس کے یہ بھی معنی ہوں اور اگر یہ معنی ہیں تو پھر یہ معاملہ کافی اہم ہو جاتا ہے یعنی حکومت کی تشکیل، ولایت و ملک کے نظم و نسق کا معاملہ، دین کے اصل ستونوں میں سے ہے اور عظیم پیغمبر(ص) اسی لئے اس امر کی خاطر اتنا اہتمام کرتے ہيں اور اپنی اس ذمہ داری کو لوگوں کے سامنے کچھ اس طرح سے ادا کرتے ہیں کہ شاید انہوں نے کسی بھی واجب پر اس طرح سے عمل نہ کیا ہو! نہ نماز،نہ زکات،نہ روزہ اور نہ جہاد، مختلف قبیلوں اور سماجی طبقوں سے تعلق رکھنے والوں کو مکہ اور مدینے کے درمیان ایک چوراہے پر ایک اہم کام کے لئے اکٹھا کرتے ہيں اور پھر اس امر کا اعلان کرتے ہيں کہ جس کی خبریں پورے عالم اسلام میں پھیل گئيں کہ پیغمبر اعظم صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے ایک نیا پیغام پہنچایا ہے۔

khamenei.ir


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Nov 20