Sunday - 2018 Sep 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183532
Published : 23/9/2016 9:45

اصول کافی شیعیت کے پاس معصومین(ع)کے فرامین کی سب سے معتبر میراث ہے

یہ کتاب تین حصوں:اصول دین،فروع دین(یعنی فقھی احکام) اور روضہ کافی(متفرقات) میں تقسیم ہوئی ہے، مجموعی طور پر اس میں چونتیس کتابیں، تین سو چھبیس باب اور سولہ ہزار(16000) سے زیادہ حدیثیں ہیں۔

الکافی یا اصول کافی،تشیع کے پاس سب سے عظیم اور معتبر مجموعہ  احادیث ہے جسے ابوجعفر محمد بن یعقوب بن اسحاق کلینی رازی (المتوفى 328 / 329 ہجری)، نے تحریر کیا ، شیخ کلینی(رح) نے اس کتاب کو اہل بیت(ع) کے شاگردوں اور شیعہ و اہل سنت کے اہم اور معتبر راویوں کی روایات کی بنیاد پر مرتب کیا،اس کتاب کو تألیف کرنے میں شیخ کلینی (رح) نے اپنی زندگی کے تقریباً بیس سال صرف کئے،لہذا یہ کتاب میراث  مذھب اہل بیت(ع) کا ایک گرانقدر  سرمایہ شمار ہوتا ہے،اس مجموعہ میں کل 16,199 روایات ہیں۔
شیخ کلینی(رح) نے اس کتاب کو لکھنے کے لئے اپنے زمانہ کے تقریباً تمام علمی اور حدیثی مراکز جیسے ایران، شام، عراق اور سعودی عرب کا سفر کیا یہاں تک کہ بزرگوں سے احادیث کو سننے اور حاصل کرنے،قریہ بہ قریہ اور دور دراز  دیہاتوں اور شھروں کا سفر  اختیار کیا اس لحاظ سے اسلامی تعلیمات اوراحکام خصوصا مکتب تشیع کی تعلیمات کو استنباط اوراستخراج کرنے کے لئے سب سے پہلا اور اہم منبع و مرجع سمجھا جاتاہے۔
یہ کتاب تین حصوں:اصول دین،فروع دین(یعنی فقھی احکام) اور روضہ کافی(متفرقات) میں تقسیم ہوئی ہے، مجموعی طور پر اس میں چونتیس کتابیں، تین سو چھبیس باب اور سولہ ہزار(16000) سے زیادہ حدیثیں ہیں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Sep 23