Sunday - 2018 Sep 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183559
Published : 26/9/2016 22:7

تھذیب الاحکام علمائے حقہ کے رجوع کرنے کا اھم منبع ہے

تھذیب الاحکام کو شیعہ مسلک کی معتبر حدیثی کتابوں میں سے ہی نہیں بلکہ کتب اربعہ میں سے گنا جاتا ہے،ہر زمانے میں علمائے تشیع اور فقہاء اس کتاب کی اہمیت کے قائل رہے ہیں۔


ولایت پارٹل: تھذیب الاحکام شیخ الطائفہ کے لقب سے مشہور ابو جعفر محمد بن حسن طوسی (وفات ۴۶۰ق) کے حدیثی مجموعے کا نام ہے،اس کتاب کو امامیہ کی کتب اربعہ میں سے شمار کیا جاتا ہے،شیخ طوسی نے اسے الاستبصار سے پہلے لکھا،اس مجموعے میں صرف فقہی احکام سے متعلق احادیث بیان کی گئی ہیں۔
تھذیب الاحکام کو شیعہ مسلک کی معتبر حدیثی کتابوں میں سے ہی نہیں بلکہ کتب اربعہ میں سے گنا جاتا ہے،ہر زمانے میں علمائے تشیع اور فقہاء اس کتاب کی اہمیت کے قائل رہے ہیں،اس کتاب میں فقہی احکام سے متعلق اہل بیت اطہار(ع) سے مروی روایات کو ذکر کیا گیا ہے،شیخ طوسی نے اس کتاب کو شیخ مفید کی کتاب المقنعہ کی توضیح میں لکھا،یہ کتاب فقہی روایات کے بیان کے ساتھ ساتھ اصولی،رجالی اور انکے علاوہ مفید ابحاث پر مشتمل ہے۔
شیخ طوسی نے اس کتاب میں اصول دین سے مربوط ابحاث کی طرف اشارہ نہیں کیا ہے بلکہ اول سے لے کر آخر تک فروع دین سے متعلق یعنی طہارت سے کتاب دیات تک کے احکام کے متعلق احادیث آئمہ طاہرین(ع) سے ذکر کی ہیں،اس کتاب کے عناوین کی ترتیب شیخ مفید کی کتاب المقنعہ کے مطابق ہے،شیخ طوسی نے اس کتاب میں قرآنی آیات،احادیث متواترہ،قرائن قطعیہ پر مشتمل احادیث اور اجماع مسلمین سے استدلال کیا ہے اور اصحاب کے درمیان مشہور روایات کو بھی ذکر کیا ہے،نیز مخالف روایات، ان کی جمع،روایات کے ضعف سند اور عمل اصحاب کو بھی ذکر کیا ہے،یہ کتاب ۳۹۳ ابواب و ۱۳۵۹۰ احادیث پر مشتمل ہے۔
کتاب کے آخر میں شیخ طوسی نے مشیخہ ذکر کیا ہے جس میں ان کتابوں کی سند ذکر کی ہےجن سے اس کتاب میں احادیث نقل ہوئی ہیں،اس مشیخہ کی شروحات لکھی گئی ہیں جیسا کہ سید ہاشم توبلی نے« تنبیه الاریب وتذکرة اللبیب فی ایضاح رجال التهذیب» کے نام سے شرح لکھی۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Sep 23