Thursday - 2018 Nov 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183573
Published : 27/9/2016 18:38

حج کے متعلق رہبر انقلاب کا نظریہ:

حج کے موقع پر تفرقہ انگیزی سامراجیت کا سب سے بڑا حربہ

برسہا برس سے مغربی سامراج اور توسیع پسند طاقتوں کے ہاتھ ان حرکتوں میں مصروف ہیں،حج میں انہیں اس کا بڑا اچھا موقع مل جاتا ہے کہ شیعہ کو سنی کے اور سنی کو شیعہ کے خلاف مشتعل و برافروختہ کریں۔


ولایت پارٹل:
اس وقت عالم اسلام میں سامراج اور امریکا کا ایک بنیادی ہدف اختلاف پیدا کرنا ہے اور اس کا بہترین راستہ شیعہ سنی اختلافات کو ہوا دینا ہے،آپ دیکھ رہے ہیں کہ دنیا میں سامراج کے پروردہ عناصر،عراق کے مسائل کے سلسلے میں کیسی باتیں کر رہے ہیں،کیسی زہر افشانی کر رہے ہیں اور اس خیال خام کے سبب امت اسلامی کے درمیان کیسے نفاق کے بیج بو رہے ہیں؟! برسہا برس سے مغربی سامراج اور توسیع پسند طاقتوں کے ہاتھ ان حرکتوں میں مصروف ہیں،حج میں انہیں اس کا بڑا اچھا موقع مل جاتا ہے کہ شیعہ کو سنی کے اور سنی کو شیعہ کے خلاف مشتعل و برافروختہ کریں،ایک دوسرے کے مقدسات اور محترم ہستیوں کی توہین کے لئے ورغلائیں،بہت ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے،صرف حج میں ہی نہیں بلکہ پورے سال اور سبھی میدانوں میں ہوشیار و چوکنا رہنے کی ضرورت ہے،شیعہ سنی جنگ امریکا کا سب سے محبوب مشغلہ ہے،صدیاں گزر جانے کے بعد بھی وہ جنگ میں ایک دوسرے کے مد مقابل صف آرا ہونے والوں کی مانند ایک دوسرے کے سامنے بیٹھیں، بغض و کینے میں ڈوب کر ایک دوسرے کے خلاف بولیں،ایک دوسرے کو گالیاں دیں، بد کلامی کریں! بعید نہیں ہے کہ اس پر محن دور میں حج کے موقع پر اختلاف و انتشار پیدا کرنے کے لئے کچھ افراد کو کرائے پر حاصل کر لیا گيا ہو، لوگوں کو بہت ہوشیار رہنا چاہئے،کاروانوں میں شامل علمائے کرام اس مسئلے میں زیادہ ذمہ دارانہ انداز میں کام کریں،انہیں معلوم ہونا چاہئے کہ دشمن کی مرضی کیا ہے،یہ بہت بڑی غفلت اور سادہ لوحی ہے کہ انسان اس خیال کے تحت کہ وہ حقیقت کا دفاع کر رہا ہے،دشمن کی سازش کی مدد کرنے لگے اور دشمن کے لئے کام کرنے لگے،کچھ لوگ مزدوری لے کر، پیسے لیکر یہ کام کرتے ہیں،بسا اوقات سطحی فکر والے متعصب لوگوں کو ایک دوسرے کے عقائد کے خلاف برانگیختہ اور مشتعل کرتے ہیں،اب اگر سامنے والا ویسا ہی شدید رد عمل دکھاتا ہے تو بلا شبہ ان کا مقصد پورا ہو جاتا ہے کیونکہ ان کا تو مقصد ہی یہی ہے،وہ ہمیں آپس میں دست بگریباں دیکھنا چاہتے ہیں تاکہ وہ مطمئن رہیں۔
khamenei.ir


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Nov 22