Wed - 2018 Sep 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183589
Published : 29/9/2016 15:31

ھندوستان کی شرکت نہ کرنے کی وجہ سے،اسلام آباد کی سارک کانفرنس ملتوی

ھندوستان کی جانب سے انیسویں سارک سربراہی کانفرنس میں شرکت نہ کئے جانے کے اعلان کے بعد نومبر میں اسلام آباد میں ہونے والی کانفرنس ملتوی کر دی گئی۔


ولایت پارٹل:ھندوستان کے زیر انتظام کشمیر کے اوڑی علاقے میں ھندوستانی فوجی مرکز پر ہونے والے حملے کے بعد ھندوستان اور پاکستان کے تعلقات سخت کشیدہ ہو گئے ہیں،ھندوستان نے اس حملے میں پاکستان کے ملوث ہونے کا الزام لگایا ہے جبکہ پاکستان نے اس الزام کو سختی کے ساتھ مسترد کر دیا ہے،اوڑی حملے میں اٹھارہ ھندوستانی فوجی ہلاک ہو گئے تھے۔
ھندوستان کا کہنا ہے کہ موجودہ ماحول میں وہ اسلام آباد میں ہونے والی سارک سربراہی کانفرنس میں شرکت نہیں کر سکتا،ھندوستان کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ حکومت ھندوستان نے منگل کو ہی نیپال کو، جو اس وقت سارک کا چیئرمین ملک ہے، اس کی اطلاع دے دی تھی،سارک کے قوانین کے مطابق اگر ایک بھی رکن ملک، کانفرنس میں شرکت سے انکار کردے تو کانفرنس ملتوی ہو جائے گی-
پاکستان نے ھندوستان کے اس فیصلے کو افسوسناک قرار دیا ہے،پاکستان کی وزارت خارجہ کے ترجمان نفیس زکریا نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ھندوستان کا اعلان افسوسناک ہے اور اس سلسلے میں اسلام آباد سے کوئی باقاعدہ رابطہ نہیں کیا گیا،اس درمیان بعض ذرائع کے حوالے سے یہ بھی اطلاعات ہیں کہ ھندوستان کے ساتھ ساتھ افغانستان، بنگلہ دیش اور بھوٹان نے بھی اسلام آباد سارک سربراہی کانفرنس میں شرکت کرنے سے انکار کر دیا ہے،پاکستانی میڈیا نے بھی سفارتی ذرائع کے حوالے سے اسلام آباد میں سارک سربراہی کانفرنس کے التوا کی تصدیق کر دی ہے،سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ ملتوی ہونے والی کانفرنس کے دوبارہ انعقاد تک سارک کی سربراہی نیپال کے ہی پاس رہے گی۔
ابنا


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Sep 19