Sunday - 2018 Sep 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 184161
Published : 14/11/2016 18:16

ایران اور چین ایک دوسرے کے مزید قریب آئے

چینی وزیر دفاع نے اپنے ایرانی ہم منصب سے ملاقات کے دوران اہم دفاعی معاہدے پر دستخط کر دئے۔

ولایت پورٹل:چین کے وزیر دفاع لیفٹیننٹ جنرل وانگ وان کوانگ جو اسلامی جمہوریہ ایران کے تین روزہ دورے پر ہیں،نے اپنے ایرانی ہم منصب سے ملاقات کے دوران اہم دفاعی معاہدے پر دستخط کئے ہیں۔
ایران اور چین کے وزرا نے اس معاہدے پر ایران کے وزارت دفاع کے دفتر میں دستخط کئے ہیں،دونوں ممالک کے دفاعی حکام نے اس دوران خطے اور بین الاقوامی امور پر تبادلہ خیال کیا۔،ایران کے وزیر دفاع جنرل حسین دھقان نے چینی صدر کے تہران دورے اور ان کے ایرانی ہم منصب حسن روحانی کے ساتھ دفاعی اور عسکری تعاون میں اضافے سے متعلق موافقت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا: ایران چین کے ساتھ طویل المدت دفاعی اور عسکری تعاون کو اپنی خارجہ پالیسی میں سب سے زیادہ ترجیح دیتا ہے اور چینی وزیر دفاع کا تہران دورہ بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے،انہوں نے اس بیان کے ساتھ، کہ چین اور ایران کے درمیان دفاعی اور عسکری تعاون خطے اور دنیا کے استحکام اور امن کا ضامن ہے، تاکید کی: خطے میں امن و استحکام ایشیا کے تمام ممالک کی ذمہ داری ہے،اس موقع پر چین کے وزیر دفاع لیفٹیننٹ جنرل وانگ وان کوانگ نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا: ایران کی عظیم مملکت اپنی قدیم تہذیب و تمدن کی وجہ سے سیاسی، سیکیورٹی، عسکری، اقتصادی اور ثقافتی میدان میں ممتاز درجے کی حامل ہے اور میں بے حد خوش ہوں کہ اپنے قریبی دوست جنرل دھقان کے ساتھ تہران میں گفتگو کر رہا ہوں،انہوں نے کہا کہ ایران اور چین کے درمیان مشترکہ مفادات اور افہام و تفہیم نے خطے اور بین الاقوامی سطح پر مختلف مسائل میں مزید دفاعی اور عسکری تعاون بڑھانے کے لئے مکمل طور پر راہ ہموار کی ہے،چینی وزیر دفاع نے جنرل دھقان کے دو سال قبل کے بیجنگ دورے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے دنوں ممالک کے درمیان دفاعی اور عسکری تعاون کی تعریف کی اور کہا: ایران اور چین کے درمیان دفاعی اور عسکری تعاون تہران میں ہونے والے معاہدے کے اجرا کے بعد مزید وسعت پیدا کرےگا۔
تسنیم



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Sep 23