Tuesday - 2018 july 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 184163
Published : 14/11/2016 19:5

نائیجیریا پولیس نے پر امن عزاداروں پر کی فائرنگ

عزاداری کے جلوس پر نائیجیریا کی پولیس کے حملے میں دس عزادار شہید اور متعدد زخمی ہوئے ہیں۔

ولایت پورٹل:نائیجیریا کی اسلامی تحریک اور عینی شاہدین کے مطابق نائیجیریا کی پولیس نے شیعہ مسلمانوں پر اس وقت فائرنگ کردی جب وہ پیر کی صبح چہلم امام حسین علیہ السلام کے علامتی جلوس میں شریک تھے,اس رپورٹ کے مطابق نائیجیریا کی پولیس نے پرامن عزاداروں کو کانو شہر کے باہر ایک شاہراہ پر گھیر کا نشانہ بنایا ہے،واقعے ایک عینی شاہد کا کہنا ہے کہ پولیس نے عزاداروں پر پہلےآنسوگیس کے گولے پھینکے اور پھر براہ راست فائرنگ شروع کردی۔ اس حملے میں درجنوں عزادار زخمی بھی ہوئے ہیں جن میں سے متعدد کی حالت نازک ہے،کانو شہر میں عزاداروں پر پولیس کا یہ حملہ ایسے وقت کیا گیا ہے جب، نائیجیریا کی فوج نے صوبہ کاتسینا کے شہر فونتوا میں یوم عاشور کے جلوس پر فائرنگ کردی تھی جس میں نو عزادار شہید اور متعدد زخمی ہوگئے تھے،اس سے قبل بارہ اور چودہ دسمبر دوہزار پندرہ کو نائیجیریا کی فوج نے زاریا شہر میں عزاداروں کا قتل عام کیا تھا جس میں سیکڑوں عزادار شہید ہوگئے تھے جن میں نائیجیریا کی اسلامی تحریک کے سربراہ شیخ ابراہیم زکزاکی کے تین بیٹے بھی شامل تھے،ایمنسٹی انٹرنیشنل نے اپنی رپورٹ میں نائیجیریا کی فوج کو بے گناہ شیعہ مسلمانوں کے قتل عام کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے اس کی سخت مذمت کی تھی۔
سحر



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 july 17