Tuesday - 2018 August 14
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 184577
Published : 13/12/2016 18:8

سی آی اے کی درندگی کو منظرعام پر نہ لانے کا کیا فیصیلہ اوباما انتظامیہ نے

امریکی سینیٹرز کے مطالبات اور امریکی صدر کی رضامندی کے ساتھ ہی، سی آی اے کی، شکنجہ رسانی کی دستاویزات کو پوشیدہ کر دیا گیا-


ولایت پورٹل:وائٹ ہاؤس کے وکیل نیل اگسٹن کے بقول امریکی صدر بارک اوباما نے کہا ہے کہ سی آئی اے میں شکنجہ رسانی کے سلسلے میں سینٹ کی رپورٹ آنے کے بعد اسے بارہ سال تک خفیہ رکھا جائے,وائٹ ہاؤس نے اسی طرح سینٹ کی انٹلی جنس کمیٹی کے ریچرڈ بور اور ڈی این فینش ٹین، کے نام ایک خط میں کہا ہے کہ سی آئی اے کے شکنجوں سے متعلق رپورٹوں کو محفوظ کردیا گیا,امریکی کانگریس میں ان دونوں نے اوباما سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ بیس جنوری دو ہزار سترہ میں ڈونلڈ ٹرمپ کی، تقریب حلف برداری سے قبل شکنجے سے متعلق دستاویزات کو پوشیدہ کر دیں,امریکی سینٹ نے دو ہزار چودہ میں ایک رپورٹ میں اعلان کیا تھا کہ سی آئی اے کے اہلکاروں نے تشدد آمیز رویہ اپنایا ہے,یہ رپورٹیں ایسی حالت میں سامنے آئی ہیں کہ امریکہ کے نو منتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے دوران اعلان کیا تھا کہ انتخابات میں کامیاب ہونے کی صورت میں وہ نہ صرف واٹر بورڈنگ جیسی ایذاؤں کا احیاء کریں گے بلکہ اس سے بھی بدتر روشوں کو استعمال کریں گے-
سحر



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 August 14