Monday - 2019 January 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185470
Published : 4/2/2017 17:18

بچے کو باوضو ہوکر دودھ پلانے کی اہمیت

چونکہ اگر اللہ کی نافرمانی کے عالم میں اسے دودھ پلایا گیا تو ظاہر ہے کہ وہ بڑا ہوکر ماں باپ کا فرمانبردار نہیں بن سکتا،لہذا اس مرحلہ میں ماں کی ذمہ داری بہت بڑی ہے اگر اس ذمہ داری کو بوجھ سمجھ کر چھوڑ دیا جائے تو پھر اس کے نتائج خراب ہونگے اسی وجہ سے اسلامی تعلیمات میں بچے کی تربیت بچپن ہی سے ،صحیح ڈھنگ سے کرنے کی تاکید کی گئی ہے،ورنہ اگر بعد میں اس کی تربیت کرنے کی کوشش کی گئی تو شاید اس کے نتائج اتنے دلکش اور حسین نہ ہوں۔

ولایت پورٹل:
اگر آج کوئی عورت اپنے بچے کو با وضو ہوکر دودھ پلائے تو وہ بڑی خوش نصیب ہے اور اگر وضو نہیں کر سکتی تو کم از کم دودھ پلاتے وقت ذکر پروردگار ،یا اس کی حمد و تسبیح میں مصروف رہنے کی بڑی فضیلت ہے۔
ایسا نہ ہو کہ کہیں دودھ پلاتے ہوئے ماں کی توجہ ادھر ادھر ہو،مثلاً ادھر بچے کو  دودھ پلارہی ہے ادھر بیٹھی ٹی وی پر ڈرامہ دیکھ رہی ہے،یا کسی دلکش  فلم کا منظر دیکھ رہی ہے ،اگر ایسی حالت میں بچے کو دودھ پلایا جائے گا تو اس کا انجام کیا ہوگا؟قارئین خود اس کا اندازہ لگا سکتے ہیں،چونکہ اگر اللہ کی نافرمانی کے عالم میں اسے دودھ پلایا گیا تو ظاہر ہے  کہ وہ بڑا ہوکر ماں باپ کا فرمانبردار نہیں بن سکتا،لہذا اس مرحلہ میں ماں کی ذمہ داری بہت بڑی ہے اگر اس ذمہ داری کو بوجھ سمجھ کر چھوڑ دیا جائے تو پھر اس کے نتائج خراب ہونگے اسی وجہ سے اسلامی تعلیمات میں بچے کی تربیت بچپن ہی سے ،صحیح ڈھنگ سے کرنے کی تاکید کی گئی ہے،ورنہ اگر بعد میں اس کی تربیت کرنے کی کوشش کی گئی تو شاید اس کے نتائج اتنے دلکش اور حسین نہ ہوں۔
اگر اسلامی تعلیمات میں ماں کے لئے وہ عظیم مقام «الجنۃ تحت اقدام الامھات» ۔یعنی جنت ماں کے پیروں کے نیچے ہے۔ بیان ہوا ہے ،تو وہ اس لئےہے کہ جس طرح بچے کی تربیت ماں کر سکتی ہے ویسی کوئی بھی نہیں کرسکتا جبکہ آج کی دنیا کا سب سے بڑا المیہ یہ ہے کہ ہم انگلش میڈیم اور مہنگے اسکول میں بچوں کا ایڈمیشن کرواکے یہ سمجھتے ہیں کہ ہم نے حق تربیت ادا کردیا اور وہاں کی ٹیچرس اس کی تربیت کرلیں گی یہ والدین کی خام خیالی ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2019 January 21