Monday - 2018 Oct. 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185569
Published : 8/2/2017 19:39

ملک کے رکھوالوں نے لوٹی ہیں روہنگیا خواتین کی عزتیں:ہیومن رائٹس واچ

ہیومن رائٹس واچ نے روہنگیا مسلمان خواتین کے ساتھ بڑے پیمانے پر ہونے والے جنسی تشدد کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔


ولایت پورٹل:ہیومن رائٹس واچ نے کہا ہے کہ ایسے ثبوت و شواہد ملے ہیں جن سے ثابت ہوتا ہے کہ میانمار کے روہنگیا مسلمانوں کو بڑے پیمانے پر جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے اور اس سلسلے میں بین الاقوامی تحقیقات ہونی چاہئے,ہیومن رائٹس واچ نے اپنی رپورٹ میں حکومت میانمار سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس ملک کی مسلمان خواتین کے ساتھ بڑے پیمانے پر ہونے والے منظم جنسی جرائم اور تشدد کی فوری طور پر بین الاقوامی تحقیقات کی زمین ہموار کرے,ہیومن رائٹس واچ کی سینئر انسپیکٹر پرینکا ترپاٹھی نے کہا ہے کہ مسلمان خواتین پر ہونے والے جنسی تشدد اور جارحیت کے عینی شاہدین نے بتایا ہے کہ میانمار کے فوجی اور سیکورٹی اہلکاروں نے بھی اپنی وردی میں ان انسانیت سوز جرائم کا ارتکاب کیا ہے،اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن نے تین فروری دو ہزارسترہ کو جاری ہونے والی اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ انسانی حقوق کمیشن کے رپورٹروں نے اب تک جن خواتین سے گفتگو کی ہے ان میں سے نصف سے زیادہ خواتین نے روہنگیا خواتین اور لڑکیوں کے ساتھ جنسی جارحیت کی گواہی دی ہے،بین الاقوامی اداروں کی رپورٹ کے مطابق میانمار کے صوبہ راخین کے مانگدا علاقے کے انہتر ہزار سے زیادہ مسلمان  میانمار کی فوج اور سیکورٹی اہلکاروں کے بڑے پیمانے پر مظالم اور تشدد کے باعث اپنا گھر بارچھوڑ کر بنگلہ دیش میں پناہ لینے پر مجبور ہوئے ہیں جبکہ تئیس ہزار در بدر ہیں-
سحر





آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Oct. 22