Monday - 2018 June 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185582
Published : 9/2/2017 17:58

نخبۃ العلماء سید حسن رضا زنگی پوری

مولانا نے مزید اعلیٰ تعلیم کے لئے فیض آباد سے عرب و ایران کا ارادہ کیا ، حج و زیارات و طلب علم کا دلکش سفر شیوخ و علماء سے فیض یاب ہونے کا ذریعہ بنا ،پانچ سال تک علمی مرکزوں سے استفادہ اور روحانی سرچشموں سے سیراب ہوئے۔

ولایت پورٹل:
نخبۃ العلماء ،سلمان زماں،ابوذر دوراں ،مولانا سید حسن رضا حسینی ابن قاسم علی زنگی پوری اپنے وطن میں سن ۱۱۹۳ ہجری کو  پیدا ہوئے ہوش سنبھالا اور ابتدائی تعلیم سے فارغ ہوئے تو سید محمد صاحب دیوکھٹوی کی خدمت میں حاضر ہوئے انہیں کی درس گاہ سے معقولات و منقولات مکمل کیے اور مزید اعلیٰ تعلیم کے لئے فیض آباد سے عرب و ایران کا ارادہ کیا ، حج و زیارات و طلب علم کا دلکش سفر شیوخ و  علماء سے فیض یاب ہونے کا ذریعہ بنا ،پانچ سال تک علمی مرکزوں سے استفادہ اور روحانی سرچشموں سے سیراب ہوئے۔
آیت اللہ الحاج آقای شیخ ابراہیم کرباسی اصفہانی (متوفی ۱۲۶۲ ہجری) ،صاحب نخبۃ اس عہد کے نامور مجتہد تھے ،مولانا حسن رضا نے فقہ اصول کا درس آخر ان سے لیا اور آقای کرباسی نے اجازہ دیا،مولانا حسن رضا انتہائی احتیاط کی بناء پر شیخ ہی کی تقلید کرتے رہے،شیخ کے بعد پھر نہ کسی کی تقلید کی اور نہ کسی کو تقلید کرائی ،بلکہ عمل باحتیاط کو وتیرہ بنا لیا تھا۔
وفات
نخبۃ العلماء کی وفات سن ۱۲۷۹ ہجری مطابق ۱۸۶۲ ء کو ہوئی۔



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 June 18