Monday - 2018 June 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185619
Published : 11/2/2017 19:29

ہم سر کٹا سکتے ہیں،لیکن ظالم کے سامنے جھکائیں گے نہیں:بحرینی علماء

منامہ میں علماء نے تحریک آزادی بحرین کی سالگرہ کے موقع پر خون شہداء اور قوم کے ساتھ تجدید عہد کرتے ہوئے کہا ہے کہ بحرینی قوم پوری طاقت کے ساتھ میدان میں موجود رہے،انقلاب کی نئی نسل کو چاہئے کہ وہ پر جوش طریقے سے سرگرمی کا مظاہرہ کریں، اس پوری تحریک کے دوران ہم خواتین کے پوری طاقت کے ساتھ میدان عمل میں موجودگی کے احسان مند ہیں۔

ولایت پورٹل:
اللؤلؤة ٹی وی کے مطابق بحرینی علماء کی جانب سے جاری کئے گئے بیان کے مطابق فروی ۲۰۱۲ میں چلائی گئی تحریک آزادی، ایک ایسا شعلہ عزت و کرامت ہے کہ جو ایک سال کے بعد دوسرے سال شہیدوں کے خون کی طاقت سے قاتلوں ،فاسدوں اور مغرور ظالموں کے خلاف بھڑک رہا ہے اور آزادی کے متوالوں اور انقلابیوں کو طاقت و قوت سے سرفراز کر رہا ہے،ماہ فروری بحرینی عوام کے حافظے میں ایک یاد رہنے والی تاریخ اور نہ مٹنے والا قابل فخر اورنورانی صفحہ ہے، وہ قوم کہ جس نے اب تک غاصبوں ، دراندازوں اورظالموں کے آگے تاریخ کے کسی بھی دور میں سر نہیں جھکایا اور کبھی بھی سر نہیں جھکائے گی ۔
ایسے وقت میں کہ جب انقلابی تحریک کو چھ سال ہو چکے ہیں ایک نئی اور امید بخش نسل پیدا ہوئی ہے جس نے اپنی آنکھوں سے ان چھ برسوں میں اپنے انقلابی جوانوں کے انقلاب کانمونہ عمل کے طور پر دیکھا ہے،ہر شخص کو مسجد امام صادق (ع) میں اور شیخ عیسی قاسم کے منبر کے سامنے یہ فریاد بلند کرتے ہوئے سنا ہے کہ ہم خدا کے سوا کسی کے آگے نہیں جھکیں گے ، خدا کے سوا کسی کے آگے سر تسلیم خم نہیں کریں گے، اپنے اجتماعات میں پرجوش انداز میں ھیھات منا الذلہ ، کے نعرے لگائے ہیں۔
یہ امید بخش نسل ، مصطفی حمدان جیسے بہادر اور شجاع جوانوں کی نسل ہے کہ جس نے آیت اللہ شیخ عیسی قاسم پر حملہ آوروں کا مقابلہ کیا اور زخمی ہو کر بستر موت تک پہنچ گئے ، ہمارا خطاب اس نسل سے ہے، ہم ان سے توقع رکھتے ہیں کہ اس سال امید اور شادابی ،اور سرگرمی اور تحرک سے بھرپور کچھ الگ کر کے دکھائیں،اسی طرح ہم بحرینی قوم سے مطالبہ کرتے ہیں کہ انقلاب کی باگ ڈور اپنے ہاتھ میں لیں اوراپنے غیض وغضب کو رضائے الہی اور دین کا رخ دیتے ہوئے وطن کی حفاظت کے میدان میں بڑے پیمانے پر حاضر ہوں ، اور تمام پرامن مظاہروں میں بھرپور جوش وخروش سے شرکت کریں۔
علماء کرام کا کہنا تھا کہ آج ہمیں آگاہ ،بصیر اوربا فہم خواتین کے انقلاب کے برسوں میں ہر میدان میں موجود رہنے کی قدر دانی کرنی چاہیے اورہم تاکید کے ساتھ کہتے ہیں کہ ہم اس سلسلے میں خواتین کے ممنون و مشکور ہیں،اس مقام پر اور اس مناسبت سے علماء اپنے نیک شہیدوں اور قوم کے ساتھ عہد کرتے ہیں کہ وہ جو پاک خون بہائے گئے ہیں اور قوم نے جو قربانیاں دی ہیں ان کے ساتھ وفاداری کا ثبوت دیں گے۔
ابلاغ



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 June 18