Tuesday - 2018 Dec 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185713
Published : 15/2/2017 20:8

شہید رابع(رح) کا جہاد

عبد العزیز صاحب نے ملا نصر اللہ کابلی کا چربہ اتارا اور تقیہ کے طور پر اپنے اصل نام کے بجائے غلام حلیم نام رکھا ،خدا کا انتظام دیکھئے کہ ادھر عبدالعزیز تحفہ اثنا عشریہ لکھ رہے تھے اور ادھر مرزا محمد صاحب اس کے جواب لکھتے جاتے تھے۔


ولایت پورٹل:مولانا حکیم میرزا محمد غیاث احمد خان کشمیری دہلوی معقولات و منقولات میں عالم بے بدل ،طب میں حکیم محمد شریف صاحب دہلوی کے شاگرد تھے اور طب میں مہارت کی بناء پر مہاراجہ کشمیر کے معالج رہے،اور کشمیری کہلائے علوم دینیہ میں جناب سید رحم علی مؤلف بدر الدجیٰ کے تلمیذ تھے ،کیا بعید ہے کہ شیخ علامہ محمد حسن(شہید ثانی کے پوتے) سے بھی کسب فیض کیا ہو،درس و تدریس ،جواب و مسائل دینیہ روزمرہ کا معمول تھا۔
مؤلف نجوم السماء نے آپ کے قلمی و دستخطی مسائل دیکھے تھے اور انھیں حکیم صاحب کے اجتہاد کا گمان ہوا «ختم فقیہ» تاریخ وفات سے اس گمان کو مزید قوت ملتی ہے ،کامل ان کا تخلص تھا،حکیم مرزا محمد صاحب نے تحفہ اثنا عشریہ کا جواب لا جواب لکھ کر زندگانی جاوید حاصل کی،عبد العزیز صاحب نے ملا نصر اللہ کابلی کا چربہ اتارا اور تقیہ کے طور پر اپنے اصل نام کے بجائے غلام حلیم نام رکھا ،خدا کا انتظام دیکھئے کہ ادھر عبدالعزیز تحفہ اثنا عشریہ لکھ رہے تھے اور ادھر مرزا محمد صاحب اس کے جواب لکھتے جاتے تھے اس سلسلے میں انہوں نے جناب غفرانمآب کی خدمت میں عریضہ  بھی تحریر کیا۔
عبد العزیز نے مسئلہ طہارت خمر اور جمع بین الصلاتین پر کچھ لکھا تو حکیم صاحب اعلی اللہ مقامہ نے اس کی تردید کی ،جس کے جواب میں غرۃ الراشدین لکھا گیا،جناب حکیم باقر علی خان صاحب نے مولوی عبد العزیز کے اس جواب کا جواب معین الصادقین لکھا ،نزہہہ اثنا عشریہ کی بارہ جلدیں ہیں لیکن نظر ثانی نہ فرماسکے تھے کہ ایک دشمن نے بڑی خفیہ تدبیر سے آپ کو شہید کردیا۔
پنجہ شریف دہلی میں مرقد منور زیارت گاہ خاص و عام ہے ۔
شہادت
مولوی عبد الحی نے المختصر کے حوالے سے ۱۲۲۵ ہجری تاریخ شہادت رقم کی ہے۔
آثار
۱۔نزہہ اثنا عشریہ بجواب تحفہ اثنا عشریہ
۲۔تاریخ العلماء
۳۔رسالہ علم بدیع
۴۔رسالہ صرف فارسی
۵۔نہایۃ الدرایۃ شرح الوجیزۃ(شیخ بہائی)
۶۔تنبیہ اھل الکمال و الانصاف علی اختلال رجال اھل الخلاف :اس کتاب میں ان راویوں کا ذکر ہے جو صحاح ستہ میں کذابین ، وضاعین و مجاھیل و ضعفاء  خوارج و نواصب و قدریہ و مرجئہ ہیں۔
۷۔رسالہ فلسفہ
۸۔تتمہ نزہہ
۹۔باب فقہ
۱۰۔منتخب فیض القدیر شرح جامع صغیر
۱۱۔منتخب النساب
۱۲۔منتخب کنز العمال
۱۳۔احادیث فضائل آل محمد و مثالب اصحاب
۱۴۔رسالہ بداء
۱۵۔رسالہ رؤیت باری تعالیٰ
۱۶۔رسالۃ فی تعصبات اھل السنۃ
اسی طرح شہید(رح) نے طویل مطالعے میں متعدد حواشی اور متعدد کتابوں سے خلاصے بھی لکھے تھے جن کی فہرست بہت طویل ہے ۔
مطلع انوار




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Dec 18