Wed - 2018 Oct. 24
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185772
Published : 18/2/2017 19:33

عورت مرد کی شریک حیات ہے اس کی تابع محض نہیں:رہبر انقلاب

یہ دونوں دو دوست اور دو شریک ہیں،کبھی مرد چشم پوشی کرے اور کبھی عورت، کوئی اس مقام پر اپنے سلیقہ اور خواہش سے چشم پوشی کرلے کوئی کسی اور مقام پر، تاکہ ایک دوسرے کے ساتھ زندگی بسر کرسکیں۔


ولایت پورٹل:
ایسا نہیں ہے کہ عورت کو ہر جگہ مرد کی پیروی ہی کرنا چاہیئے، شریعت اسلام میں ایسا کوئی حکم نہیں ہے اور اگر قرآن مجید میں بھی یہ آیت کریمہ آئی ہے:«اَلرِّجَالُ قَوَّامُوْنَ عَلیٰ النِّسآء»۔(۱)
اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ عورت کو چاہیئے کہ وہ تمام امور میں مرد کی تابع رہے اور مغرب زدہ افراد اور یوروپ کے اندھے مقلدین کی طرح یہ بھی نہیں کہا جاسکتا کہ عورت کو مختار کل ہونا چاہیئے اور مرد کو اس کا تابع، یہ بھی غلط ہے،یہ دونوں دو دوست اور دو شریک ہیں،کبھی مرد چشم پوشی کرے اور کبھی عورت، کوئی اس مقام پر اپنے سلیقہ اور خواہش سے چشم پوشی کرلے کوئی کسی اور مقام پر، تاکہ ایک دوسرے کے ساتھ زندگی بسر کرسکیں۔(۲)
..............................................................................................................................................................................................................................
حوالہ جات:
۱۔سورہ النساء:آیت ۳۴ ۔
۲۔ایک خطبہ عقد کے موقع پر دولہا و دلہن کو نصیحت۔۱۸ اپریل ،سن ۱۹۹۸ ء ۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Oct. 24