Friday - 2018 july 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185866
Published : 22/2/2017 18:50

نماز کے ذریعہ مشکلات کا حل

نماز منظومہ عبادت کا وہ شمس نصف النہار ہےجس کے اطراف تمام سیارہ ھای عبادت محو طواف ہیں اگر یہ قبول ہوئی تو تمام اعمال قبول ہوجائیں گے اور اگر رد کردی گئی تو پھر کسی بھی بڑے چھوٹے عمل کی اللہ کے نزدیک کوئی حیثیت نہیں۔

ولایت پورٹل:
ولایت پورٹل:دین اسلام نے ہر دین سے زیادہ امر بندگی اور عبادت پر تاکید فرمائی ہے تاکہ انسان میں غرور و تکبر جیسے رذائل پیدا نہ ہوجائیں کہ جو بہت سے اجتماعی و اخلاقی مفاسد کی جڑ ہیں چنانچہ نماز اسی منظومہ عبادت کا شمس نصف النہار ہے  جس کے اطراف تمام سیارہ ھای عبادت محو طواف ہیں اگر یہ قبول ہوئی تو تمام اعمال قبول ہوجائیں گے اور اگر رد کردی گئی تو پھر کسی بھی بڑے چھوٹے عمل  کی اللہ کے نزدیک کوئی حیثیت نہیں ،اگرچہ بعض افراد کہتے ہیں کہ نماز پڑھنا تھوڑا مشکل ہے لیکن خداوند عالم ،نماز کو مشکلات کے حل ہونے کا ذریعہ قرار دے رہا ہے چنانچہ ارشاد پروردگار ہوتا ہے:
یَا أَیُّھَا الَّذِیْنَ آمَنُوا أسْتَعِیْنُوا بِالصَّبْرِ وَالصَّلٰوۃِ اِنَّ اللّٰهَ مَعَ الصّٰبِرِیْنَ۔
اے ایمان والو! مصیبت کے وقت صبر اور نماز کے ذریعہ سے خدا کی مدد مانگو ، بے شک خدا صبر کرنے والوں ہی کے ساتھ ہے،یعنی اس آیت میں مصیبت کے وقت نماز پڑھ کر دعا مانگنے کو کہا جارہا ہے اور ساتھ میں یہ بھی کہ خدا بھی ان ہی لوگوں کے ساتھ ہے جو خدا کو صبر اور نمازکے ذریعہ یاد رکھیں۔
 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 july 20