Tuesday - 2018 Dec 11
Languages
13137:نتائج: 0.156سیکنڈ میں
جستجو برای :
پیرس میں پچھلے ایک ہفتہ سے جاری احتجاجی مظاہرے تقریباً ایک دہائی کے سب سے بڑے پیمانے پر ہونے والے مظاہروں میں سے ہیں جن میں لوگوں کا مطالبہ یہ ہے کہ اس صدر اور اس کی کابینہ سے ملک میں کرپشن کو فروغ ملا ہے جس کے سبب مہنگائی آسمان کو چھونے لگی ہے لہذا انہیں فوراً استعفٰی دیدینا چاہیئے۔
اگر ہمارے غلط رویہ کی بنا پر کوئی بچہ نہایت پر سکون اور خاموش طبیعت کا مالک بن چکا ہے تو اس میں کہیں نہ کہیں والدین کی تربیتی غلطی ہے لہذا ایسے بچوں کو ان کا بچپن لوٹانے کی ضرورت ہے اگر کسی بچے کی اس انداز میں تربیت کی جائے کہ وہ بچپن میں ہی خاموش مزاج بن جائے تو یہ سمجھ لینا چاہیئے کہ اس میں موجود جزبات بڑے ہوکر ایک طوفان کی شکل اختیار کرجائیں گے کہ جن کو رام کرنا کسی ساحل کے بس کی بات نہیں ہوگی۔ہمارے معاشرے میں فساد،چوری، ڈکیتی،اور دیگر اخلاقی برائیوں کے پیچھے وہی لوگ ہوتے ہیں جن کا بچپن بڑا پرسکون اور خاموشی کے ساتھ گزرا ہے لہذا بین الاقوامی اداروں کی جانب سے شائع کردہ اعداد و ارقام اس کا منھ بولتا ثبوت ہیں۔لہذا اگر والدین نے یہ کام کردیا اور پُر سکون بچوں کو ان کے بچپن کے کھِلتے اور کھل کھلاتے ہوئے گلشن میں لوٹا دیا تو مستقبل میں ان کا وجود اخلاق و آداب سے معطر ہوجائے گا۔
ان حقوق کو ادا کرنے کے لئے کسی مال اور دولت کی بھی ضرورت نہیں پڑتی۔ان کی ادائیگی نہایت آسان امر ہے اور وہ فقط یہ ہے کہ انسان صاحب حق سے معافی مانگ لے اور معذرت طلب کرلے کہ بھائی اگر ہم سے آپ کی شأن میں گستاخی ہوئی ہے تو ہمیں معاف کردیجئے۔البتہ یہ طریقہ اس وقت کارگر ہے جب صاحب حق زندہ ہو لیکن اگر وہ شخص جس کا آپ نے حق ضائع کیا ہے اس دنیا سے جاچکا ہے تو تلافی کے لئے ضروری ہے کہ اس کے لئے نیک اعمال کئے جائیں ،دعا و استغفار کی جائے تاکہ وہ آپ سے راضی ہوجائے۔
امیر شام جب خلیفہ دوم کے استقبال کے لئے اپنے شاہی عملہ کو ساتھ لیکر آئے اور خلیفہ دوم نے معاویہ کی یہ شأن و شوکت اور ٹھاٹ باٹ دیکھے تو ان سے رہا نہ گیا انہوں نے دریافت کر ہی لیا:یہ تم نے اپنی کیسی حالت بنا رکھی ہے؟میں نے سنا ہے کہ تمہارے دربار میں ضرورت مندوں کو پہونچنے نہیں دیا جاتا اور تم ان کی کچھ نہیں سنتے؟امیر شام نے جواب دیا:ہم ایسی جگہ پر ہیں جہاں دشمن کے جاسوسوں کی کثرت ہے پس ہمیں ضرورت ہے کہ ہم اپنی حکومت کی شان و شوکت کو ظاہر کریں تاکہ وہ ہم سے خوف کھائیں اور ہمارے رعب کے سامنے مرعوب رہیں!خلیفہ دوم معاویہ کی اس توجیہ کے مقابل خاموش ہوگئے اور اسی کے بعد سے اسلام میں آمرانہ ٹھاٹ باٹ کے جراثیم پنپنے لگے۔
تہران میں ایران، پاکستان، ترکی، چین ، روس اور افغانستان 6 ممالک کے پارلیمانی سربراہان کا دہشت گردی کے خلاف باہمی تعاون کے دوسرے اجلاس کا آغاز ہوگیا ہے ۔
مشرقی شام کے صوبے دیرالزور کے ایک علاقے پر داعش مخالف نام نہاد امریکی اتحاد نے ایک بار پھر بمباری کی ہے۔
صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں ہونے والے ایک بم دھماکے میں 2 فوجی جنرلز سمیت 9 صومالی فوجی ہلاک ہوگئے۔
پاکستانی وزیر اعظم نے مزیدکہا کہ پاکستان امریکا کی جنگ بہت لڑ چکا،اب ہم وہ کریں گے جو ہمارے عوام اور ملک کے مفاد میں ہوگا ۔
امریکی نشریاتی ادارے سی این این کے دفتر میں بم کی غلط اطلاع سے خوف و ہراس پھیل گیا ۔
امریکی چیئرمین آف جوائنٹ چیفس آف اسٹاف جنرل جوزف ڈنفورڈ نے کہا ہے کہ امریکا کا افغانستان سے جنگ میں مکمل کامیابی کے بغیر انخلاء ایک اور نائن الیون کا موجب بنے گا۔
  • کل نتائج : 13137