Tuesday - 2018 Nov 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185960
Published : 27/2/2017 20:0

نماز میں ریاکاری شرک کے مترادف

پیغمبر اسلام(ص) سے مروی ہے کہ ریاکار کو بروز محشر تین ناموں سے پکاراجائے گا:(۱)اے کافر!(۲)اے فاجر!(۳)اے خاسر !،تیرا عمل باطل اور اجر ضائع ہو چکا ہے اور آج تیرا کوئی حصہ نہیں ہے پس تو اپنے عمل کی مزدوری اس سے مانگ جس کے لئے تو نے عمل کیا تھا اور حضور(ص) نے فرمایا ہے ریاکاری سے بچو !کیونکہ ریا کرنا شرک ہے۔


ولایت پورٹل: قرآن مجید میں خداوند عالم کا ارشاد ہے :«اِنَّ الْمُنٰفِقِیْنَ یُخَادِعُوْنَ اللّٰهَ وَھُوَ خَادِعُھُمْ وَاِذَا قَامُوا اِلیٰ الصَّلٰوۃِ قَامُوا کُسَالیٰ»۔(۱)
ترجمہ: بے شک منافقین اپنے خیال میں خداکو فریب دیتے ہیں درحالیکہ وہ ان کے فریب کو (باطل کرنے والا) ہے اور جب یہ لوگ نماز پڑھنے کے لیئے کھڑے ہوتے ہیں تو (بے دلی سے) بوجھل ہوئے کھڑے ہوتے ہیں اور فقط لوگوں کو دکھاتے ہیں اور دل سے خداکو کچھ یونہی یاد کرتے ہیں۔ اس آیت سے یہی پتہ چلتا ہے کہ کچھ افراد ایسے ہیں جو نماز کیلئے کھڑے تو ہوتے ہیں مگر دکھاوے کیلئے اوربے دلی سے تو ایسے لوگوں کو منافقین کہا گیا ہے،کیونکہ منافقین دل سے اسلام تو قبول نہیں کرتے اس لئے احکام اسلام پر عمل کرنے کو ان کا دل نہیں چاہتا بس وہ بے دلی سے اور بوجھل ہوکر نماز میں شامل ہوتے ہیں تاکہ دیگر افراد دیکھیں کہ ہم بھی نماز پڑھتے ہیں لہٰذا ایسے ہی لوگوں کو ریاکار کہا جاتا ہے۔ پیغمبر اسلام(ص) سے مروی ہے کہ ریاکار کو بروز محشر تین ناموں سے پکاراجائے گا۔
(۱)اے کافر!
(۲)اے فاجر!
(۳)اے خاسر !
تیرا عمل باطل اور اجر ضائع ہو چکا ہے اور آج تیرا کوئی حصہ نہیں ہے پس تو اپنے عمل کی مزدوری اس سے مانگ جس کے لئے تو نے عمل کیا تھا اور حضور(ص) نے فرمایا ہے ریاکاری سے بچو !کیونکہ ریا کرنا شرک ہے۔
......................................................................................................................................................................................................
حوالہ جات:
۱۔سورہ النساء، آیت:۱۴۲۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Nov 20