Tuesday - 2018 Oct. 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185976
Published : 28/2/2017 19:42

فدک کے لئے دربار میں شہزادی کونین(س) کا استدلال

حضرت فاطمہ(س) نے اپنی گفتگو کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے فرمایا: اے ابوبکر! کیا خدا نے یہ نہیں فرمایا کہ خدا تمہیں تمہاری اولاد کے بارے میں وصیت کرتا ہے۔ بیٹے کا حصہ دو بیٹیوں کے برابر ہے( اس کا مطلب یہ ہے کہ باپ کی میراث میں بیٹی کا حصہ ہے)۔


ولایت پورٹل:جابر بن عبداللہ کہتے ہیں: فدک کے غصب ہو جانے کے بعد فاطمہ زہرا(س)نے فرمایا:«قَالَتْ:اَعْطِنِی مِیْرَاثِی مِنْ اَبِیْ رَسُولِ اللہ»۔
ترجمہ:مجھے میرے باباکی میراث واپس کر دو۔
ابوبکر نے کہا: پیغمبر میراث نہیں چھوڑتے ہیں ( اَلنَّبِیُّ لَایُوَرِّثُ)
فَقَالَتْ:اَلَمْ یَرِثُ سُلَیْمَانُ دَاؤدَ؟(۱)
تو بی بی(س) نے فرمایا کیا حضرت سلیمان پیغمبر حضرت داؤد  پیغمبر کی میراث کے وارث و حقدار نہیں تھے؟
اس پر ابوبکر کو غصہ آگیا کہنے لگے: پیغمبر(ص) میراث نہیں چھوڑتے ہیں۔
فَقَالَتْ:اَلَمْ یَقُلْ زَکَرِیَّافَہَبْ لِی مِنْ لَدُنْکَ وَلِیَّایَرِثُنِی وَیَرِثُ مِنْ آلِ یَعْقُوْبَ۔(۲)
کیا حضرت زکریا پیغمبر(ص) نے یہ نہیں کہا تھا: پس مجھے اپنے پاس سے ایک بیٹا عطا کر دے تاکہ وہ میری میراث اور آل یعقوب(ع) کی میراث کا حقدار ہو۔
ابوبکر نے پھر وہی جملہ دہرایا: پیغمبر میراث نہیں چھوڑتے ہیں۔
فَقَالَتْ:«اَلَمْ یَقُلُ یُوْصِیْکُمُ اللہُ فِیْ اَوْلاَدِکُمْ لِلذَّکَرِمِثْلُ حَظِّ الُاْنثَیَیْنِ؟»۔(۳)
حضرت فاطمہ(س) نے  اپنی گفتگو کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے فرمایا: اے ابوبکر! کیا خدا نے یہ نہیں فرمایا کہ خدا تمہیں تمہاری اولاد کے بارے میں وصیت کرتا ہے۔ بیٹے کا حصہ دو بیٹیوں کے برابر ہے( اس کا مطلب یہ ہے کہ باپ کی میراث میں بیٹی کا حصہ ہے)۔
اس کے جواب میں ابوبکر نے وہی قرآن مخالف بات دہرائی، پیغمبر میراث نہیں چھوڑتے ہیں۔
آیات قرآن کے ذریعہ میراث کا اثبات
فاطمہ زہرا(س)نے باغ فدک غصب کرنے کی مذمت کی اورابوبکرسے معلوم کیا:
میرے بابا کی میراث کو تم نے کیوں غصب کیا ہے؟
ابوبکر نے جواب دیا پیغمبر میراث نہیں چھوڑتے ہیں۔
فاطمہ زہرا(س) نے قرآن کی آیتوں کے ذریعہ ابوبکر کے دعوے کو باطل کر دیا اور فرمایا:قَالَتْ:اکَفَرْتَ بِاللہِ وَکَذَّبْتَ بِکِتَابِہ؟ قَالَ اللہُ۔«یُوْصِیْکُمُ اللہُ فِی اَوْلَادِکُمْ  لِلذَّکَرِ مِثْلُ حظِّ اَلُانْثَیَیْنِ»۔(۴)
اے ابوبکر! کیا تم نے خداکا انکارکر دیااوراس کی کتاب کو جھٹلا دیا، قرآن مجید میں ارشاد ہے: خدا تمہیں تمہاری اولاد کے بارے میں وصیت کرتا ہے کہ بیٹا دو بیٹیوں کے برابر میراث پائے گا۔

.....................................................................................................................................................................................................................
حوالہ جات:
۱۔سورہ نمل:آیت ۱۶۔
۲۔سورہ مریم:آیت ۶ ۔
۳۔سورہ النساء:آیت ۱۱ ۔
۴۔وسائل الشیعہ،ج۱۷ ،ص۴۳۹ ،تفسیر نور الثقلین،ج۱ ،ص ۴۵۰ ۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Oct. 23