Sunday - 2018 Nov 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 186174
Published : 12/3/2017 18:30

ملا محمود جونپوری

ایران کے مشہور فلسفی میر باقر داماد کے احفاد میں سے بعض علماء نے ملا محمود کی کسی کتاب کے خلاف ایک کتاب لکھی ہے،ملا محمود اصل میں سنی المذہب تھے لیکن آخر عمر میں مذہب حقہ اہل بیت(ع) کو اپنا مشرب قرار دیا تھا،کتب خانہ ناصر الملت لکھنؤ میں ان کا ایک رسالہ عقائد اثنا عشریہ اس کا ثبوت ہے۔


ولایت پورٹل:ملا محمود بن محمد شاہ محمد جونپوری،فاروقی النسل،ہندی الاصل فلسفی منطقی عالم ہیں،جونپور میں پیدا ہوئے تاریخ ولادت سن ۹۹۳ ہجری ہے،استاذ الملک ملا افضل کے شاگرد خاص تھے،ایرانی حکماء سے علوم عقلیہ حاصل کیے۔
شاہ عبدالعزیز نے تحفہ اثنا عشریہ میں ملا محمود کو شیعہ فقیہ لکھا ہے۔(تحفہ اثنا عشریہ،باب ۳،ص ۱۶۶،طبع لکھنؤ سن ۱۲۹۵ ہجری)۔
ایران کے مشہور فلسفی میر باقر داماد کے احفاد میں سے بعض علماء نے ملا محمود کی کسی کتاب کے خلاف ایک کتاب لکھی ہے،ملا محمود اصل میں سنی المذہب تھے لیکن آخر عمر میں مذہب حقہ اہل بیت(ع) کو اپنا مشرب قرار دیا تھا،کتب خانہ ناصر الملت لکھنؤ میں ان کا ایک رسالہ عقائد اثنا عشریہ اس کا ثبوت ہے۔
ملا محمود صاحب نے اپنے گھر جونپور ہی میں انتقال کیا تاریخ وفات سن ۱۰۶۲ ہجری ہے۔
آثار
۱۔عقائد اثنا عشریہ
۲۔حواشی فرید
۳۔الشمس البازغہ :یہ کتاب ہندوستان کی فلسفیانہ کتابوں میں اعلیٰ درجے کی کتاب شمار ہوتی ہے اور درس نظامی میں داخل ہے۔
مطلع انوار



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Nov 18