Wed - 2018 Sep 26
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 187011
Published : 1/5/2017 17:36

بد ہضمی کا مقابلہ روایتی کھانوں سے ہی ممکن:ماہرین صحت

تشویش کی بات یہ ہے کہ ہندوستان میں نوجوانوں کی بڑی تعداد بھی اس پیچیدہ مرض سے محفوظ نہیں ہیں،مسلسل جنگ فڈ اور فاسٹ فوڈ کا نوجوانوں میں بڑھتا رجحان اس مرض کے اہم اسباب میں سے ہے،اسکے علاوہ روایتی کھانوں سے زیادہ فاسٹ فوڈ کی لذت ہونے کی وجہ سے بھی نوجوانوں کی بڑی تعداد فاسٹ فوڈ سے قریب اور روایتی کھانوں سے دور ہو رہی ہے۔

ولایت پورٹل:ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ اس وقت ہندوستان میں بد ہضمی سب سے بڑا مسئلہ بنا ہوا ہے،تشویش کی بات یہ ہے کہ ہندوستان میں نوجوانوں کی بڑی تعداد بھی اس پیچیدہ مرض سے محفوظ نہیں ہیں،مسلسل جنگ فڈ اور فاسٹ فوڈ کا نوجوانوں میں بڑھتا رجحان اس مرض کے اہم اسباب میں سے ہے،اسکے علاوہ روایتی کھانوں سے زیادہ فاسٹ فوڈ کی لذت ہونے کی وجہ سے بھی نوجوانوں کی بڑی تعداد فاسٹ فوڈ سے قریب اور روایتی کھانوں سے دور ہو رہی ہے،ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ اگر چند صحت کے اصول کو اپنانے کی صورت میں اس مرض کا مقابلہ کیا جا سکتا ہے۔
۱۔روایتی غذاؤں کے رواج کو بچوں اور نوجوانوں میں فروغ دیا جائے۔
۲۔فاسٹ فوڈ کے نقصانات سے طلباء اور نوجوانوں کو واقف کرایا جائے۔
۳۔ترکاریوں اور تازہ پھلوں کو زیادہ سے زیادہ غذا میں شامل کیا جائے۔
۴۔وقت پر پابندی سے کھانے کی عادت کو اپنے لئے لازم کر لیا جائے۔
۵۔بد ہضمی کا بہترین علاج یہی ہے کہ غذا میں ہمیشہ توازن کو باقی رکھا جائے۔
۶۔وقتاً فوقتاً ڈاکٹر سے رجوع کرتے ہوئے طبی جانچ کروانا بھی نا گریز ہے۔




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Sep 26