Monday - 2018 Sep 24
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 187022
Published : 2/5/2017 14:5

اسرائیل اور جرمنی کے درمیان سیاسی کشیدگی اپنے عروج پر

اسرائیلی پالیسیوں سے ناراض جرمنی اور غاصب صیہونیوں کے بگڑتے ہوئے روابط ایک بحرانی شکل اختیار کر گئے ہیں۔

ولایت پورٹل:رپورٹ کے مطابق اسرائیلی سیاست سے نالاں جرمنی کی ناراضگی میں  گزرتے وقت کے ساتھ مزید اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔
کہا جا رہا ہے کہ دونوں ممالک کے تعلقات بہت کشیدہ ہو چکے ہیں جس کے نتیجے میں سیاسی مشکلات کے سامنے آنے کے آثار دکھائی دے رہے ہیں۔
اسرائیلی روزنامہ ھارآرتض نے ایک سیاسی رہنما کے حوالے سے لکھا ہے کہ فلسطین کے حوالے سے صہیونی سیاست کے سبب اسرائیل اور جرمنی کے درمیان پائی جانے والی کشیدگی اپنے عروج پر پہنچ چکی ہے۔
اس روزنامہ کے سیاسی امور پر نظر رکھنے والے صحافی باراک راوید نے وزارت خارجہ کے ایک ذمہ دار کے حوالے سے کہا ہے کہ جرمنی نے یونیسکو میں اسرائیل کے خلاف پیش کی گئی قرارداد کو تو ویٹو کیا ہی نہیں البتہ عربی ممالک سے قربتیں بڑھانے کی بہت کوششیں کی ہیں۔
گذشتہ ہفتہ کو صیہونی وزارت خارجہ کے معاون نے تل ابیب میں جرمنی کے سفیر سے ملاقات کرتے ہوئے یونیسکو میں جرمنی کے اسرائیل مخالف موقف پر شدید تنقید کرتے ہوئے ان سے سخت لہجے میں بات کی۔
صیہونی وزیراعظم نتانیاہو نے گذشتہ ہفتہ کو صیہونی مخالف اسرائیلی تنظیموں سے جرمن وزیر خارجہ کی ملاقات کے سبب ان کے ساتھ ہونے والی اپنی ملاقات کو رد کر دیا تھا۔
سگمر گیبریل نے نتانیاہو سے ملاقات رد ہونے کو اہمیت نہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ وہ اسرائیل کیلئے اپنے موقف میں کوئی تبدیلی نہیں لائیں گے۔
جرمن روزنامہ اشپیگل نے نتانیاہو کے اقدام کو توہین آمیز قرار دیتے ہوئے اس اقدام کی سخت الفاظ میں مذمت کی حالانکہ بعد میں صیہونی وزیراعظم نے گیبریل سے ٹیلیفون پر رابطہ کرنے کی بہت کوشش کی لیکن جرمن وزیر داخلہ نے کوئی جواب نہیں دیا۔
tsneem



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Sep 24