Tuesday - 2018 Sep 25
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 187028
Published : 2/5/2017 15:44

غیبت امام(عج) کے زمانے میں صالحین کی تربیت ہی منتظرین حقیقی کا مقصد:آیت اللہ مکارم

آیت اللہ العظمی مکارم نے تاکید کرتے ہوئے فرمایا:انتظارکی ثقافت کو فروغ دینا چاہیے تاکہ اس ثقافت کےسائے میں خرافات کا راستہ روکنے اورصالحین کی تربیت کے ذریعے امام زمانہ ارواحنا لہ الفداء کے ظہورکے لیے اقدام کئے جاسکیں۔

ولایت پورٹل:آیت اللہ ناصرمکارم شیرازی نے آئندہ روشن نامی انسٹی ٹیوٹ کےسربراہ سےملاقات کے دوران کہا ہےکہ اس انسٹی ٹیوٹ نے مہدویت کےمیدان میں بہت گرانقدرکام انجام دیےہیں کہ امید کی جاتی ہے وہ حضرت حجت علیہ السلام کے لیے رضایت بخش واقع ہوں گے۔
انہوں نےمزید کہا ہےکہ بعض افراد جھوٹ بول کراس طرح اظہارکرتے ہیں کہ جب امام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف ظہورکریں گے تو انسانی معاشرہ پسماندہ ہوجائے گا، جب کہ یہ باتیں غلط ہیں بلکہ آپ کے ظہورکے ساتھ انسانی معاشرےعلوم اوردیگرمختلف میدانوں میں بھرپورترقی کریں گے۔
آیت اللہ مکارم شیرازی نےکہا ہے کہ امام زمانہ عجل اللہ تعالٰی فرجہ الشریف کے ظہورکے ساتھ انسانی معاشرہ بارہ گنا ترقی کرے گا اوربعض احادیث میں آیا ہے کہ اس دور میں پوسٹ اورخط وکتابت کی ضرورت نہیں رہے گی۔
انہوں نےمزید کہا ہےکہ بعض افراد امام علیہ السلام کا تشدد کے مظہرکےعنوان سے تعارف کروانے کی کوشش کررہے ہیں جبکہ یہ سب باتیں جھوٹی ہیں اور وہ اپنی ان باتوں کے ذریعے امام عصر علیہ السلام کے ساتھ لوگوں کے رابطہ کو ختم کرنا چاہتے ہیں۔
قم کے اس مرجع تقلید نےکہا ہےکہ امام زمانہ علیہ السلام محبت اورمہربانی کے مظہرہیں لہذا بعض باتیں باعث نہیں بننی چاہییں کہ لوگ ان سے خوف زدہ ہوجائیں۔
انہوں نے آخرمیں کہا ہےکہ انتظارکی ثقافت کو فروغ دینا چاہیے تاکہ اس ثقافت کےسائے میں خرافات کا راستہ روکنے اورصالحین کی تربیت کے ذریعے امام زمانہ ارواحنا لہ الفداء کے ظہورکے لیے اقدام کئے جاسکیں۔
شفقنا



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Sep 25