Wed - 2018 Sep 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 187087
Published : 4/5/2017 15:16

صلہ رحم کیوں؟

پیغمبر اکرم(ص) کا ارشاد گرامی ہے:جو بھی اپنی جان ومال کے ساتھ رشتہ داروں کی طرف صلہ رحمی کرنے کے لئے قدم اٹھاتا ہے ، خداوند عالم ۱۰۰ شھید کے برابر اسے اجر عطا کرتا ہے اور ہر قدم کے برابر ۴۰ ہزار نیکی لکھتا ہے۔


ولایت پورٹل:اپنوں کے ساتھ پیار محبت ،احسان اور حقوق کی رعایت کرنے  کو صلہ رحمی کہتے ہیں،اور یہ واجب ہے۔
شهيد اول رحمة الله عليه فرماتے ہیں:
اس حد تک واجب ہے  کہ انسان قطع رحمی کے دائرے  میں نہ آئے  کیونکہ قطع رحمی گناہ ہے بلکہ اسے گناہ کبیرہ کہا گیا ہے،نیز روایات میں آیا ہے کہ:صلہ رحمی سے  عمر طولانی  ہوتی ہے اور یہ بری موت  سے بچاتی ہے۔
رسول خدا صلى الله عليہ و آلہ فرماتے ہیں:«صلوا ارحامكم ولو بالسلام»۔(1)
ترجمہ:اپنوں کے ساتھ صلہ رحمی کرو اگرچہ ایک سلام ہی کیوں نہ ہو۔
خداوند عالم کا ارشاد ہے:«فهل عسيتم ان توليتم ان تفسدوا فى الارض و تقطعوا ارحامكم اولئك الذين لعنهم الله فاصمهم و اعمى ابصارهم»۔(2)
تو کیا تم سے کچھ بعید ہے کہ تم صاحبِ اقتدار بن جاؤ تو زمین میں فساد برپا کرو اور قرابتداروں سے قطع تعلقات کرلو۔
اس قول خداوندی سے معلوم ہوتا ہے کہ قطع رحمی ایک فساد ہے زمین پر،کیونکہ ایک گھرانہ اگر فاسد ہو جائے تو ایسا ہے جیسے پوری زندگی فاسد ہو گئی ہے۔
پيغمبر اکرم صلى الله عليه و آله و سلم فرماتے ہیں:«ما من خطوة احب الى الله من خطوتين خطوة سيد بها صف فى سبيل الله و خطوة الى ذى رحم قاطع بصلها»۔(3)
ترجمہ:خدا کی راہ  میں کوئی بھی قدم اٹھانا ان دو قدم سے بہتر نہیں ہے،ایک خدا کی راہ میں لڑنے والے مجاہدین کی صف میں شامل ہو، دوسرا،وہ قدم کہ جو قطع رحمی کو ختم کرنے اور صلہ رحمی برپا کرنے کے لیے اٹھے۔
پيغمبر اکرم صلى الله عليه و آله و سلم فرماتے ہیں:«ان المعروف يمنع مصارع السوء و ان الصدقة تطفى غضب الرب و صلة الرحم تزيد فى العمر و تنفى الفقر...»۔(4)
ترجمہ:نیک کام مصیبتوں کے سامنے رکاوٹ بنتے ہیں ،صدقہ دینے سے خدا کا غضب ٹل جاتا ہے، اور صلہ رحمی سے عمر زیادہ اور فقر کا خاتمہ ہوتا ہے۔
پيغمبر اکرم صلى الله عليه و آله و سلم فرماتے ہیں:«من مشى الى ذى قرابة بنفسه و ماله ليصل رحمه اعطاه الله عزوجل اجر ماءة شهيد و له بكل خطوة اربعون الف حسنة»۔(5)
ترجمہ:جو بھی اپنی جان ومال کے ساتھ رشتہ داروں کی طرف صلہ رحمی کرنے کے لئے قدم اٹھاتا ہے ، خداوند عالم ۱۰۰ شھید کے برابر اسے اجر عطا کرتا ہے اور ہر قدم کے برابر ۴۰ ہزار  نیکی لکھتا ہے۔
پيغمبر اکرم صلى الله عليه و آله و سلم فرماتے ہیں:«صلة الرحم تعمر الديار و تزيد فى الاعمار و ان كان اهلها غير اخيار»۔(6)
ترجمہ:صلہ رحمی گھروں کو آباد اور عمر کو زیادہ کرتی ہے،اگرچہ ان گھروں کے رہنے والے نیک نہ بھی ہوں۔
پيغمبر اکرم صلى الله عليه و آله و سلم فرماتے ہیں:«صل رحمك ولو بشربة من ماء و افضل ما يوصل به الرحم كف الاذى عنها»۔(7)
ترجمہ:اپنوں کے ساتھ صلہ رحمی سے پیش آؤ، اگرچہ ایک گلاس پانی ہی کیوں نہ ہو، اور بہترین صلہ رحمی یہ ہے کہ انہیں کسی قسم کی تکلیف نہ دو۔
امام سجاد عليه السلام ارشاد فرماتے ہیں:«يا بنى انظر خمسة فلا تصاحبهم ولا تحادثهم ولا ترافقهم فى طريق ... اياك و مصاحبة القاطع لرحمه فانى وجدته ملعونا فى كتاب الله عزوجل فى ثلاثة مواضع»۔(8)
ترجمہ:میرا  بیٹا! پانچ قسم کے لوگوں سے سفر میں دوستی نہ کرنا  ...: بچو اس سے جس نے رشتہ داروں سے قطع رحمی کی ہو،  کیونکہ میں نے قرآن میں تین جگہ پر اسے ملعون دیکھا ہے، قرآن نے تین جگہ پر لعنت اور نفرین کی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حوالہ جات:
1۔اصول كافى،ج3، 233
2۔محمد / 22
3۔بحار 71/ 89
4۔بحار 71/ 88
5۔بحار 71/ 89
6۔بحار 71/ 94
7۔بحار 71 / 104
8۔ميزان الحكمة،ج 5 / 305، نوادر راوندى ، ج 1 / 45
 
پیروان ولایت


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Sep 19