Sunday - 2018 Sep 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 187102
Published : 4/5/2017 17:25

مغرب میں آزادیٔ نسواں کے کھوکلے نعروں کی حقیقت:

مغربی تہذیب کے برخلاف اسلام نے عورت کو مستقل حیثیت دی:رہبر انقلاب

اسی صدی کے ابتدائی دور یعنی عیسوی صدی کی دوسری اور تیسری دہائی میں عورتیں حقیقی معنوں میں اپنی ملکیت پرحق نہیں رکھتی تھیں،یعنی عورت شادی کرنے کے بعد، شوہر کی اجازت کے بغیر اپنی دولت میں تـصرف نہیں کرسکتی تھی،اب آپ اس کا موازنہ اسلامی تعلیمات و احکام سے کیجئے جہاں عورت کو مستقل حیثیت دی جاتی ہے۔

ولایت پورٹل:یوروپ والے جو آج اپنے یہاں عورتوں کی آزادی کا دعویٰ کرتے ہیں،آج سے نصف صدی پہلے تک عورت کو اس لائق بھی نہیں سمجھتے تھے کہ اپنی ذاتی ملکیت و جائیداد میں تصرف کرے،ایک یوروپی یا امریکی عورت کو آج سے پچاس ساٹھ برس پہلے تک بڑی سے بڑی دولت اور جائیداد رکھنے کے باوجود، اپنے ارادہ اور رجحان کے مطابق اس میں تصرف کرنے کی اجازت نہ تھی،ضروری تھا کہ وہ اس جائیداد اور دولت کو اپنے شوہر، باپ یا بھائی کے حوالے کرے تاکہ وہ اپنی مرضی کے مطابق اس عورت کے حق میں یا اپنے ذاتی کاموں کے لئے اسے خرچ کریں۔
اسی صدی کے ابتدائی دور یعنی عیسوی صدی کی دوسری اور تیسری دہائی میں عورتیں حقیقی معنوں میں اپنی ملکیت پرحق نہیں رکھتی تھیں،یعنی عورت شادی کرنے کے بعد، شوہر کی اجازت کے بغیر اپنی دولت میں تـصرف نہیں کرسکتی تھی،اب آپ اس کا موازنہ اسلامی تعلیمات و احکام سے کیجئے جہاں عورت کو مستقل حیثیت دی جاتی ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Sep 23