Wed - 2018 مئی 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 187340
Published : 20/5/2017 15:33

نوجوان خصوصی طور پر ظہور کے لئے تیاری کریں

ایک شخص نےحضرت علی علیہ السلام کی خدمت میں عرض کیا: اگر مسلمانوں کے بازارمیں بھیڑ کی وجہ سے مردوں اور عورتوں کے کندھے ایک دوسرے سے ٹکرائیں یا نامحرم مردوں اورعورتوں کے درمیان ہنسی مذاق اور گفتگو انجام پائے تو آپ کیا اقدام کریں گے؟امام علیہ السلام نے جواب میں فرمایا: اس سے اگلے دن علی علیہ السلام مرجائیں گے اورزندہ نہیں رہیں گے۔
 
ولایت پورٹل:حوزہ علمیہ کےایک محقق نےاس مطلب کہ قبرکی پہلی رات میں انسان کی جوانی کے گزرنےکےبارے میں سوال کیا جائےگا، کی طرف اشارہ کرتےہوئے کہا ہےکہ یہ موضوع جوانوں سے اللہ تعالیٰ کی بلند توقع سے عکاسی کرتا ہےکہ جنہیں امام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کے ظہورکے لئےآمادہ وتیاررہنا چاہیے۔
دینی محقق حجۃ الاسلام محمد داستانپور نے فانوس بیان نامی ثقافتی گروہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امام زمانہ علیہ السلام کے ساتھیوں اور اصحاب کی تعداد کم ازکم ایک لاکھ دس ہزار اور۳۱۳ ہیں کہ یہ ۳۱۳افراد فقط امام کی حکومت کے سربراہ اور کمانڈرہوں گے کہ جو عالمی مینجمنٹ کی صلاحیت رکھتے ہیں۔
انہوں نے مزید کہا ہےکہ حضرت صاحب الزمان علیہ السلام تمام انسانوں سے زیادہ اپنے ظہورکے منتظرہیں اور آپ اللہ کے بندوں کے ساتھ پیش آنےوالے واقعات پربہت زیادہ پریشان ہوتے ہیں۔
حجۃالاسلام داستانپورنے کہا ہےکہ قبرکی پہلی رات میں انسانوں سے ایک سوال یہ کیا جائے گا کہ انہوں نے جوانی کیسے گزاری ہے؟ اس سے معلوم ہوتا ہےکہ اللہ تعالیٰ جوانوں سے بہت زیادہ توقع رکھتا ہے لہذا جوانوں کو امام زمانہ علیہ السلام کے ظہور کے لئےآمادہ وتیار رہنا چاہیے۔
انہوں نےمزید کہا ہےکہ ایک شخص نےحضرت علی علیہ السلام کی خدمت میں عرض کیا: اگر مسلمانوں کے بازارمیں بھیڑ کی وجہ سے مردوں اور عورتوں کے کندھے ایک دوسرے  سے ٹکرائیں یا نامحرم مردوں اورعورتوں کے درمیان ہنسی مذاق اور گفتگو انجام پائے تو آپ کیا اقدام کریں گے؟امام علیہ السلام نے جواب میں فرمایا: اس سے اگلے دن علی علیہ السلام مرجائیں گے اورزندہ نہیں رہیں گے۔
لہذا ہم ہرگز ایسے اعمال انجام نہ دیں جو امام عصر(عج) کے ظہور میں تاخیر کا سبب قرار پائیں۔
شبستان




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 مئی 23