Thursday - 2018 August 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 187356
Published : 20/5/2017 18:30

معصومین(ع) کی نظر میں نماز کا انکار کرنے والا

امام جعفر صادق(ع) سے سوال کیا گیا کہ زنا کرنے والے اور شرابی کو کافر کیوں نہیں کہا جاتا؟ جب کہ بے نمازی کو کافر کہا جاتا ہے اس کی وجہ کیا ہے؟ امام(ع) فرماتے ہیں کہ شراب پینا اور زنا وغیرہ شہوت کے غالب آجانے کی وجہ سے ہوتے ہیں لیکن نماز ترک نہیں کی جاتی سوائے اس کے کہ اسے حقیر سمجھا جائے کیونکہ زنا کرنے والا زنا سے لذت حاصل کرتا ہے لیکن نماز ترک کرنے والا ترک نماز سے کوئی لذت نہیں حاصل کرتا۔

ولایت پورٹل:حضرت امیرالمومنین(ع)نے ارشاد فرمایا:نمازکا وجوب اسلام کے مسلمہ احکامات میں سے ہے ،پس جو کوئی نماز کے وجوب کا انکار کرتے ہوئے نماز نہ پڑھے وہ کافر ہے اور دین اسلام سے خارج ہے، کیونکہ نماز کا انکار رسالت و قرآن مجید کا انکار ہے پس ایسا شخص کافر ہے۔
اگر نماز کے وجوب کا منکر نہ ہو اور قرآن و خاتم المرسلین(ص) کی رسالت کو حق مانتا ہو اور عقیدہ رکھتا ہو کہ نماز خدا کی طرف سے واجب قرار دی گئی ہے لیکن سستی و لاپروائی کی بنا پر ترک کرتا ہو تو ایسا شخص فاسق ہے۔
امام جعفر صادق(ع) سے سوال کیا گیا کہ زنا کرنے والے اور شرابی کو کافر کیوں نہیں کہا جاتا؟ جب کہ بے نمازی کو کافر کہا جاتا ہے اس کی وجہ کیا ہے؟ امام(ع) فرماتے ہیں کہ شراب پینا اور زنا وغیرہ شہوت کے غالب آجانے کی وجہ سے ہوتے ہیں لیکن نماز ترک نہیں کی جاتی سوائے اس کے کہ اسے حقیر سمجھا جائے کیونکہ زنا کرنے والا زنا سے لذت حاصل کرتا ہے لیکن نماز ترک کرنے والا ترک نماز سے کوئی لذت نہیں حاصل کرتا۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 August 16