Monday - 2018 Dec 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 187680
Published : 5/6/2017 14:44

امام خمینی (رح)،اقبال کا مرد آہنی

امام خمینی(رح) دس سال تک اس نو بنیاد نظام کی اندرون ملک اٹھنے والی شورشوں اور غیر ملکی طاقتوں کے ایماء پر مسلط کردہ صدام کی 8 سالہ جنگ کے باوجود پائیداری و ثابت قدمی کے ساتھ قیادت کرتے رہے۔


ولایت پورٹل:
4جون معاصر تاریخ کے سب سے عظیم رہنما امام خمینی (رح) کا یوم رحلت ہے،آپ ایسی کرشمہ ساز شخصیت کے مالک تھے کہ دین کو معاشرے کا افیون قرار دینے والے کمیونزم کے زوال کی پیشین گوئی کرتے ہوئے آخری سوویت حکمران کو خط لکھا کہ کمیونزم تاریخ کے عجائب گھر کی نذر ہونے والا ہے، اس کے صرف چند سالوں میں سوویت یونین سمیت دیگر اشتراکی ممالک کے شیرازے بکھرکر رہ گئے۔
امام خمینی (رح) نے اس خط میں سیرت نبوی (ص) پر عمل کرتے ہوئے گورباچوف کو مغرب کے سرمایہ دارانہ نظام کے سبز باغ کی طرف جانے کے بجائے اسلام کی پرامن آغوش میں پناہ لینے کی دعوت دی۔
دلچسپ بات یہ ہے کہ آپ نے اس خط میں مغرب کے سرمایہ داری کے نظام کے زوال کی پیشین گوئی کرتے ہوئے لکھا تھا کہ اس کا انجام کمیونزم سے بھی بدتر ہوگا، چنانچہ اس کے آثار روز بروز زیادہ نمایاں ہوتے جارہے ہیں۔
اس کی تازہ ترین مثالیں اوباما دور میں امریکا کے مالی اداروں کا کھربوں روپے کا دیوالہ پن اور ٹرمپ کا حالیہ سعودی عرب کا دورہ ہے، جس کا مقصد امام خمینی (رح) کے جانشیں قائد انقلاب آیت اللہ خامنہ ای کے بقول دودھ دینے والی گائے سعودی عرب کو دوہ لینا تھا، جنہوں نے ایک رپورٹ کے مطابق ایران کو ہوّا بناکر 480 ارب ڈالر حاصل کرنے کے ذریعہ امریکا سے بے روزگاری کا خاتمہ کرنے کا وعدہ کیا ہے۔
امام خمینی (رح) کا سب سے بڑا کارنامہ دنیا کی طویل ترین 2500 سالہ بادشاہت کا خاتمہ ہے۔
اس کے علاوہ اس دوراندیش مرد الہی نے اسرائیل کے صفحہ ہستی سے مٹنے کی بھی پیشین گوئی کر رکھی ہے۔
آپ (رح) اسلام کو «محمدی اسلام اور امریکی اسلام» کے دو بلاکوں میں تقسیم کرتے تھے،چنانچہ ٹرمپ کے دورہ سعودی عرب سے امریکی اسلام کا چہرہ  اسلام کے نام پر انقلاب برپا کرنے والے ملک ایران کے خلاف قرارداد پاس کرنے اور قبلہ اول پر قابض اسرائیل کے ساتھ یک جہتی کے اظہار سے کھل کر سامنے آیا ہے۔
امام خمینی (رح) کی ایک عجیب پیشین گوئی اپنی تاریخ وفات کے بارے میں ہے، چنانچہ ایک شعر میں کہا تھا:
انتظار فرج  از نیمہ خرداد کشم
چنانچہ آپ ایرانی ہجری شمسی کیلنڈر ماہ خرداد کی 14 تاریخ (نیمہ خرداد) مطابق 4 جون کو داعی اجل کو لبیک کہہ گئے۔
امام خمینی (رح) کی اپنی پیش گوئیوں کی طرح انقلاب اسلامی سے کئی عشرے پہلے مفکر اسلام اور عصر حاضر کے انقلابی شاعر  ڈاکٹر علامہ اقبال (رح) نے امام خمینی (رح) کی تحریک کی کئی اشعار میں پیش گوئی کی ہے، مثلا یہ شعر:
تہران  ہو گر عالم  مشرق  کا جنیوا
شائد کرہ ارض کی تقدیر بدل جائے

کیوں کہ اس دور میں «اقوام متحدہ» کا صدر مقام جنیوا میں تھا۔
اس سے زیادہ عجیب پیشین گوئی اقبال نے ایرانی (عجم) نوجوانوں کے نام لکھی ہوئی ان کی نظم کا وہ شعر ہے جس میں انہوں نے ان نوجوانوں کو مخاطب قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ تمہارے ہاتھوں سے غلامی کی زنجیریں توڑنے والا ایک مرد آہن آنے والا ہے:
می رسد مردی کہ زنجیر غلامان بشکند
دیدہ  ام  از  روزن دیوار  زندان شما

اسلامی انقلاب سے پہلے ہمارے بعض فارسی دانوں نے اپنے بیانات میں اس مرد کی آمد کی پیشین گوئی سے مراد  شاہ ایران کی خوشامد کرتے ہوئے ان کے باپ رضا شاہ قرار دی تھی، جب کہ یہ شعر تقریباً رضا شاہ ہی کے دور میں کہا گیا تھا اور اس میں انہوں نے ایران کو زندان قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مجھے اس مرد آہن کی آمد تمہارے زندان کے دریچے سے آتے ہوئے دکھائی دی ہے۔
چنانچہ چشم فلک نے دیکھ لیا کہ اقبال کے مرد آہن (امام خمینی (رح) نے 60 کے عشرے کے اوائل میں شاہ کی امریکا اور اسرائیل نواز پالیسیوں کے خلاف آواز اٹھاتے ہوئے تحریک کا آغاز کیا، جو 1979 ء میں امریکی پٹھو پہلوی حکومت کی سرنگونی اور اسلامی جمہوریہ ایران کے قیام پر منتج ہوئی۔
امام خمینی(رح) دس سال تک اس نو بنیاد نظام کی اندرون ملک اٹھنے والی شورشوں اور غیر ملکی طاقتوں کے ایماء پر مسلط کردہ صدام کی 8 سالہ جنگ کے باوجود پائیداری و ثابت قدمی کے ساتھ قیادت کرتے رہے۔
نیز اپنی 5 جون 1962 ء کی تحریک کے آغاز کی سالگرہ سے ایک دن پہلے 4 جون 1989 ء کو دار فانی کو وداع کہہ کر دنیا بھر میں اپنے چاہنے والے کروڑوں متوالوں کو سوگوار چھوڑگئے۔
لیکن بقول برادر عزیز علی وجدان ان کے روحانی فرزندوں نے عہد کر رکھا ہے:
تیرے بیٹے، تیرے مظلوم عوام
زندہ رکھیں گے سدا خط امام

جیسے زمانہ گزرتا جارہاہے خط امام (آپ کے رہنما اصول) واضح تر ہوتے جارہے ہیں اور امریکی اسلام کے پیرو بزعم خود امام مہدی (عج) کی آمد کو روکنے کے لئے ایران سے مخاصمانہ رویہ اختیار کئے ہوئے ہیں جو اہل سنت اور اہل تشیع دونوں کے عقائد کے مطابق آخری زمانے میں ظہور فرمائیں گے۔
بانی انقلاب اسلامی امام خمینی (رح) کے یوم رحلت کے موقع پر  میں امام زمانہ (عج) اور دنیا بھر کے مستضین کی خدمت میں تعزیت پیش کرتے ہیں۔
تحریر:سید محمد رضوی



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Dec 17