Thursday - 2018 Nov 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190345
Published : 4/11/2017 12:57

کسی بھنور میں پھنسنے سے پہلے،یمن جنگ سے باز آجاؤ:سوڈانی صدر کے سابق مشیر

یاد رہے کہ 26 مارچ 2015 سے سوڈانی فوج سعودی عرب کے ساتھ یمن جنگ میں شریک ہے جس کے باعث بہت سے فوجی ہلاک اور زخمی ہوچکے ہیں،سوڈان کے صدر کو ہر طرف سے اس اتحاد میں شامل ہونے کے سبب تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔


ولایت پورٹل:سوڈان کی ایک سابق سیاسی شخصیت«غازی صلاح الدین العتبانی» نے اپنے ملک کی موجودہ حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یمن جنگ میں سعودی عرب کا مزید ساتھ نہ دے، چونکہ مستقبل قریب میں یہ اتحاد ایک ایسے بھنور میں پھنسنے جارہا ہے کہ جس سے نکلنا بہت مشکل نظر آتا ہے۔
غازی صلاح الدین نے ایک چینل کے رپورٹر سے بات کرتے ہوئے تاکید کی ہے کہ سوڈانی فوج کا ایک ایسی جنگ میں جاکر مارے جانا کہ جس میں ہمارے ملک کا کوئی مفاد نہیں ہے اور وہ بھی پارلیمنٹ کی اجازت کے بغیر؛کسی صورت جائز نہیں ہے۔
انھوں نے اپنے بات کو جاری رکھتے ہوئے کہا:ہر جنگ کے کچھ مشخص سیاسی مقاصد ہوتے ہیں،میرا حکومت سے سوال یہ ہے کہ ان کا یمن کودنا کن اھداف کے پیش نظر تھا؟اور یہ بات کوئی نہیں جانتا کہ یمن کے ساتھ جنگ کتنا عرصہ مزید طولانی ہوگی؟
یاد رہے کہ 26 مارچ 2015 سے سوڈانی فوج سعودی عرب کے ساتھ یمن جنگ میں شریک ہے جس کے باعث بہت سے فوجی ہلاک اور زخمی ہوچکے ہیں،سوڈان کے صدر کو ہر طرف سے اس اتحاد میں شامل ہونے کے سبب تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔
العالم



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Nov 15