Sunday - 2018 Nov 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190350
Published : 4/11/2017 18:22

نیویارک ٹرک حادثہ کے بعد امریکہ میں اسلامی سینٹرز اور مساجد کو نشانہ بنانے کی کوشش

ایک شخص نےاپنے آڈیو پیغام میں کہا تھا کہ وہ بہت غصے میں ہے اور وہ انتقام لینا چاہتا ہے یہاں تک کہ اگرمسلمان معاشرے کا اس دہشتگردانہ واقعہ کے ساتھ کوئی تعلق بھی نہ ہو۔


ولایت پورٹل:رپورٹ کے مطابق ہافینگٹن پوسٹ نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے کہ نیوجرسی میں موجود مساجد اور اسلامی سنٹزکو ایک مرتبہ پھردھمکی آمیزآڈیو پیغام موصول ہوئے ہیں،اس علاقےکی ایک مسجد کو ٹیلی فون کے ذریعے یہ پیغام دیا گیا تھا کہ ہم تمہاری مسجد کو جلانےکا ارادہ رکھتے ہیں،اسی طرح ایک اور دھمکی آمیزپیغام میں آیا ہے کہ ہم تمہیں قتل کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔
قابل ذکر ہےکہ نیویارک میں ایک ٹرک ڈرائیور کے کچھ لوگوں کو کچلنے کے 24گھنٹوں کے بعد یہ ان آٹھ دھمکی آمیزپیغامات میں سے ایک پیغام تھا کہ جو نیوجرسی کے  پاساییک کانٹی(ICPC)نامی اسلامی سنٹرکو ارسال ہوا ہے۔ یاد رہے اس واقعہ میں ۸ افراد ہلاک اور۱۲ دیگر افراد زخمی ہوگئے تھے۔
ایک شخص نےاپنے آڈیو پیغام میں کہا تھا کہ وہ بہت غصے میں ہے اور وہ انتقام لینا چاہتا ہے یہاں تک کہ اگرمسلمان معاشرے کا اس دہشتگردانہ واقعہ کے ساتھ کوئی تعلق  بھی نہ ہو۔
پاساییک کانٹی اسلامک سنٹرکے سربراہ عمرعواد نے پولیس کو شکایت کی ہے اوروہ ان دھمکی آمیز پیغاموں کا سراغ لگارہے ہیں۔
انہوں نے ہافینگٹن پوسٹ سےکہا ہےکہ لوگ ناراض اور پریشان ہیں کہ وہ اس طرح کے ایک اورقبیح اقدام کا مقابلہ کریں،یہ معاشرہ محسوس کرتا ہےکہ وہ اس واقعہ کا جواب دینے کے ذمہ دار مسلمان ہیں،جبکہ وہ بارہا اس حملہ آور سے اپنے تعلق کی تردید کرچکے ہیں۔
قابل ذکر ہےکہ ان حالیہ سالوں کے دوران امریکی مسلمانوں کے خلاف نفرت آمیز اقدامات میں اضافہ ہوا ہے اوراس قسم کے حملوں کے بعد اس ملک کے مسلمانوں کو بہت زیادہ نقصانات  اٹھانے پڑتے ہیں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Nov 18