Sunday - 2018 Nov 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190357
Published : 6/11/2017 14:15

اربعین؛عاشورا کے ساتھ تجدید بیعت کا دن

حقیقت میں اربعین عاشورا کے ساتھ تجدید عہد کا دن ہے،اربعین یعنی ظلم و استعمار سے بیزاری کا عالمی دن،اربعین ہمیں اس دن کی یاد دلاتا ہے کہ جب روشن سورجوں کو جہالت نے نیزوں پر اٹھا رکھا تھا اور انسانیت مظلومت کے فضائل کا ماتم کررہی تھی،اربعین ان لوگوں کے لئے تذکر اور یادآوری کا دن ہے جو محاذ حق پر کھڑے ہیں لیکن ان کے ہاتھ میں باطل کا اسلحہ ہے۔


ولایت پورٹل:اربعین کی آمد آمد ہے لہذا ضروری ہے کہ ہم کچھ باتیں حضرت زینب سلام اللہ علیہا کے حوالہ سے بھی کریں،چونکہ جناب زینب(س) کے بغیر عاشورا اور اربعین کی تفسیر نہیں کی جاسکتی۔
حضرت زینب(س) کی نگاہوں کی بلندی دشت نینوا کی وسعتوں میں اس تاریخ ساز واقعہ کا پیچھا کررہی تھیں،زینب شجاعت کا وہ عظیم منارہ ہے جو تاقیام قیامت ضامن مقصد حسین و حسینیت ہے۔
عاشورا تاریخ میں باقی ہے اور قیامت تک باقی رہے گا اگرچہ پوری کربلا صرف آدھے دن میں شروع ہوکر تمام ہوگئی اور عادی نظروں سے ایک مختصر سی جنگ تھی کہ جو صرف آدھے دن میں تمام بھی ہوگئی لیکن حقیقت میں حق و باطل کے درمیان سب سے طولانی جنگ کا نام ہے جو ابھی بھی جاری ہے،کربلا کو ۷۲ لوگوں کی مختصر سی تعداد اور صرف ایک جغرافیائی حدود میں محدود نہیں کیا جاسکتا بلکہ یہ حماسہ پوری بشریت اور آدمیت کی تاریخ پر محیط ہے اور ہم یہ بات بڑے وثوق سے کہہ سکتے ہیں کہ یہ عظیم حماسہ حضرت زینب(س) کی مرہون منت ہے چونکہ زینب کبریٰ (س) اس ذات کا نام ہے کہ جنہوں نے لمحہ شہادت امام حسین(ع) سے ہی اس عظیم امانت کو اپنی کاندھوں پر اٹھایا اور باکمال شجاعت و غیرت،علی(ع) کی بیٹی ہونے کی حیثیت سے اس راہ پر چلیں اور یاد شہید و شہادت کو لوگوں کے اذہان میں بسایا و اجاگر کیا۔
امام حسین(ع) اور آپ کے باوفا اصحاب کی شہادت نے وجود تاریخ کو اس طرح متغیر کردیا جیسے قیامت ٹوٹ پڑی ہو لیکن حسین(ع) اور آپ کے باوفا اصحاب افق تاریخ پر اس طرح چمک رہے ہیں جیسے ظلمت شب میں بدر کامل۔
یہ اربعین کا پیدل مارچ ہمیں سب سے پہلے اس اربعین کی یاد دلاتا ہے کہ جب علی کی بیٹی شام سے لوٹ کر کربلا آئی ہیں لہذا عزادار سیاہ پوش ہوکر فرزند رسول(ص) کا سوگ مناتے ہیں۔
حقیقت میں اربعین عاشورا کے ساتھ تجدید عہد کا دن ہے،اربعین یعنی ظلم و استعمار سے بیزاری کا عالمی دن،اربعین ہمیں اس دن کی یاد دلاتا ہے کہ جب روشن سورجوں کو جہالت نے نیزوں پر اٹھا رکھا تھا اور انسانیت مظلومیت کے فضائل کا ماتم کررہی تھی،اربعین ان لوگوں کے لئے تذکر اور یادآوری کا دن ہے جو محاذ حق پر کھڑے ہیں لیکن ان کے ہاتھ میں باطل کا اسلحہ ہے،اربعین غدیر کے پیمان ولایت کی تکرار کا نام ہے،اربعین بھی عاشورا کی طرح زندہ جاوید حماسہ ہے،اربعین تمام شیعوں کی عزت و افتخار کا دن ہے،اربعین باطل پر حق کی کامیابی کا راز ہے،یہ اربعین کے بعد ہی میسر ہوا کہ جب بھی کوئی حق دار اپنا حق کسی سے لینا چاہتا تھا تو وہ عاشورا کے دن امام حسین(ع) کی زبان اقدس سے نکلے ہوئے کلمات کو  ہی اپنی حقانیت کی سند کے طور پر پیش کرتا تھا،لہذا اربعین کو نہایت عقیدت اور عشق و محبت سے اپنے دل و دماغ میں بسا لینا چاہیئے۔




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Nov 18