Friday - 2018 Nov 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190385
Published : 8/11/2017 8:11

آل سعود کا انجام ایرانی بادشاہ جیسا ہوسکتا ہے؛امریکہ آئندہ کا لائحہ عمل تیار رکھے:اقوام متحدہ میں سابق امریکی سفیر

جان بولٹن نے اس حقیقت کا بھی اعتراف کیا کہ:مجھے اس بات میں کوئی شک نہیں کہ مشرق وسطی میں ایران کا نفوذ بڑھتا جارہے اور سعودی عرب اور اس جیسے دوسرے ممالک تذبذب کا شکار ہیں اور انھیں اس صورتحال کے سامنے تشویش ہونی بھی چاہیئے۔


ولایت پورٹل:فارس نیوز کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ میں امریکہ کے سابق سفیر جان بولٹن۔کہ جو ایران دشمنی میں اپنی مثال آپ ہیں۔ نے کل فاکس نیوز چینل کو دیئے ایک انٹریو میں کہا کہ:ایران و سعودی عرب کے درمیان بڑھتی خلش کو دیکھتے ہوئے امریکہ کو مشرق وسطٰی کے لئے ابھی سے آئندہ کا لائحہ عمل تیار رکھنا چاہیئے کہ اگر آل سعود پر زوال آجائے تو اسے سعودی عرب میں کیا کرنا ہے؟
جان بولٹن نے اس حقیقت کا بھی اعتراف کیا کہ:مجھے اس بات میں کوئی شک نہیں کہ  مشرق وسطی میں ایران کا نفوذ بڑھتا جارہے اور سعودی عرب اور اس جیسے دوسرے ممالک تذبذب کا شکار ہیں اور انھیں اس صورتحال کے سامنے تشویش ہونی بھی چاہیئے۔
جب بولٹن سے سعودی ولیعہد کے متعلق سوال کیا گیا تو انھوں نے کہا:اگرچہ سعودی شہزادہ کسی وقت بھی بادشاہ بن سکتا ہے لیکن امریکہ کو ابھی سے فکر مند ہونا چاہیئے اور ایران کے سابق بادشاہ جیسا کوئی دوسرا فرد اس منطقہ میں تلاش کرنے کی ضرورت ہے،چونکہ میں نہیں سمجھتا آل سعود ہمیشہ ہی قدرتمند رہ سکیں گے۔
فارس نیوز





آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 Nov 16