Friday - 2018 Nov 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190387
Published : 8/11/2017 15:43

شاہی تاج کو لیکر آل سعود کے درمیان خونی جنگ؛سعودی کے سابق شاہ فہد کے بیٹے کا قتل

رپورٹ کے مطابق شہزادہ عبدالعزیز بن فہد کو اس وقت گولیوں سے چھلنی کردیا گیا کہ جب انھوں نے سعودی کے خودسر ولیعہد محمد بن سلمان کی پالیسیوں پر تنقید کرتے ہوئے گرفتار ہونے سے انکار کیا،سعودی پولیس اہلکار شہزادہ عبدالعزیز کو گرفتار کرنے کے لئے آئی تو انھوں نے اس کے خلاف زبان کھولی ہی تھی کہ ان پر گولیوں کی بوچھار کردی گئی۔


ولایت پورٹل:رپورٹ کے مطابق سعودی ولیعہد محمد بن سلمان اور دوسرے شہزادوں کے درمیان حکومت طلبی کی دوڑ اب ایک خونی جنگ میں تبدیل ہوچکی ہے،موصولہ اطلاعات کے مطابق کل اسی کرسی کی لڑائی میں سعودی عرب کے سابق بادشاہ فہد کے بیٹے عبدالعزیز بن فہد کو بڑے بیہمانہ انداز میں قتل کردیا گیا۔
رپورٹ کے مطابق شہزادہ عبدالعزیز بن فہد کو اس وقت گولیوں سے چھلنی کردیا گیا کہ جب انھوں نے سعودی کے خودسر ولیعہد محمد بن سلمان کی پالیسیوں پر تنقید کرتے ہوئے گرفتار ہونے سے انکار کیا،سعودی پولیس اہلکار شہزادہ عبدالعزیز کو گرفتار کرنے کے لئے آئی تو انھوں نے اس کے خلاف زبان کھولی ہی تھی کہ ان پر گولیوں کی بوچھار کردی گئی۔
یاد رہے کہ 44 برس کے عبدالعزیز سعودی کے سابق شاہ فہد کے سب سے چھوٹے بیٹے تھے،انکے بارے یہ مسلسل خبریں مل رہی تھیں کہ سعودی پولیس نے انھیں گرفتار کرلیا ہے،اب جبکہ انھیں قتل کردیا گیا تو ان کی موت کے بارے میں سعودی میڈیا پر گہری خاموشی طاری کردی گئی ہے۔

پارس ٹوڈے




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 Nov 16