Saturday - 2018 Nov 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 191341
Published : 4/1/2018 18:20

امریکا علاقہ میں بد امنی کا خواہاں ہے : ایرانی وزیر دفاع

افغانستان میں منشیات کی پیداوار میں اضافہ، روز بروز بڑھتی ہوئی دہشتگردی اور یمن، افغانستان، عراق، شام اور فلسطین میں روزانہ متعدد لوگوں کا قتل عام یہ سب امریکہ کی شیطانی اور احمقانہ سیاست کا نتیجہ ہے۔

ولایت پورٹل: اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر دفاع جنرل بریگیڈیر امیر حاتمی نے اسلامی جمہوریہ پاکستان کے وزیر دفاع خرم دستگیرخان سے ٹیلی فون پر گفتگو کے دوران دونوں ملکوں کے بڑھتے تعلقات اور دفاعی مفاہمت اور تعاون کو مثبت بتاتے ہوئے پاکستانی فوج کمانڈر کے حالیہ ایران دورہ اور گفتگو کو سنگ میل قرار دیا۔
امیر حاتمی نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ اسلامی امت اور علاقہ کے حالات کے تقاضے کی بنیاد پر اسلامی دنیا اور علاقہ کے ان دو اہم ملکوں کے درمیان مزید مشاورت ہونی چاہیے، کہا: امریکی ہمیشہ اپنی ناکامیوں کو دوسرے ممالک کے سر تھوپتے آئے ہیں اور علاقہ میں عدم استحکام کی فضا ہموار کرنے کے لئے اسرائیلی ڈگر پر چل رہے ہیں۔
ایرانی وزیر دفاع نے مزید کہا: افغانستان میں منشیات کی پیداوار میں اضافہ، روز بروز بڑھتی ہوئی دہشتگردی اور یمن، افغانستان، عراق، شام اور فلسطین میں روزانہ متعدد لوگوں کا قتل عام یہ سب امریکہ کی شیطانی اور احمقانہ سیاست کا نتیجہ ہے۔
حاتمی نے ایران اور پاکستان کی دفاعی اور فوجی فیلڈ میں وسیع قابلیتوں کا ذکر کرتے ہوئے تاکید کی کہ دونوں ملکوں کی عوام کی سلامتی اور اقتصادی ترقی کے لئے ان قابلیتوں سے استفادہ کرنے کی ضرورت ہے۔
پاکستانی وزیر دفاع دستگیرخان نے بھی اس ٹیلی فون گفتگو میں دونوں ملکوں کے درمیان بڑھتے ہوئے تعلقات اور دوطرفہ دفاعی مفاہمت اور تعاون کا استقبال کرتے ہوئے کہا: علاقہ میں تیزی سے ہوتی ہوئیں تبدیلیاں اس بات کا تقاضا کرتی ہیں کہ اس مفاہمت اور تعاون میں پہلے سے زیادہ وسعت اور اضافہ ہونا چاہئے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
العالم



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Nov 17