Monday - 2018 Oct. 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 191898
Published : 4/2/2018 15:48

امریکہ داعش کو شام و عراق کی ہلاکت گاہ سے نکال افغانستان منتقل کرنا چاہتا ہے: ایرانی وزیر دفاع

افغان وزیر دفاع شاہ بہرامی نے یہ اطلاع بھی دی کہ فی الحال تقریباً ۲۰ دہشگرد تنظیمیں افغانستان میں اپنے تخریبی کاموں میں مشغول ہیں اور اگر ان سے توجہ ہٹالی جائے تو پورے خطہ میں بدامنی کا بحران کھڑا ہوسکتا ہے لہذا ہم خطہ کے تمام ممالک سے گذارش کرتے ہیں کہ وہ دہشتگردی کے خاتمہ میں ہمارا تعاون کریں۔

ولایت پورٹل: رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر دفاع بریگیڈیئرجنرل امیر حاتمی نے افغانستان کے وزیر دفاع سپہید طارق شاہ بہرامی سے ٹیلیفون پر گفتگو کرکے انھیں افغانستان میں پئے در پئے دہشتگردی حملات پر تعزیت پیش کی اور ان کے ساتھ  ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ: ایرانی قوم اور رہبر انقلاب سمیت ایران کے اعلٰی حکام، افغانستان میں ابھی کچھ دن پہلے ہونے والے پئے در پئے دھماکوں سے ملول اور رنجیدہ ہیں۔
ایران کے وزیر دفاع نے اسلامی دنیا میں افغانستان کی اہمیت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران  ہمیشہ سے اس ملک کے اندر استعماری طاقتوں کے نفوذ سے ملول خاطر رہا ہے اور ہماری کوشش یہی ہے کہ اس ملک کے لوگ امن و امان سے رہیں۔
ایرانی وزیر دفاع نے داعش کی پیدائش کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے داعش کو اس وجہ سے تیار کیا تاکہ شام و عراق میں اپنے منافع حاصل کئے جاسکیں لیکن خدا کے فضل سے امریکہ کو بڑی شکست نے دل برداشتہ کردیا اب ان کی پوری کوشش یہ ہے کہ وہ کسی طرح افغانستان کو داعش کا اڈہ بناکر یہاں مزید اپنے فوجی ٹہرانے کا جواز فراہم کرسکے۔
افغان وزیر خارجہ نے بھی اپنے ایرانی ہم منصب کے اس ٹیلفون کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ: ہم رہبر انقلاب ،اسلامی جمہوریہ ایران کے عوام اور حکام اور فوج کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہیں۔
افغان وزیر دفاع شاہ بہرامی نے یہ اطلاع بھی دی کہ فی الحال تقریباً ۲۰ دہشگرد تنظیمیں افغانستان میں اپنے تخریبی کاموں میں مشغول ہیں اور اگر ان سے توجہ ہٹالی جائے تو پورے خطہ میں بدامنی کا بحران کھڑا ہوسکتا ہے لہذا ہم خطہ کے تمام ممالک سے گذارش کرتے ہیں کہ وہ دہشتگردی کے خاتمہ میں ہمارا تعاون کریں۔
انہوں نے افغانستان میں دہشتگردی کے مقابلے کے لئے امداد پر ایرانی حکومت اور فوج کا خصوصی شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمیں امید ہے کہ یہ تعلقات مستقبل میں مزید استحکام کی صورت اختیار کر، ایک دن اس خطہ سے دہشتگردی کا خاتمہ کردیں گے۔

 
العالم


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Oct. 22