Wed - 2018 Nov 14
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 193525
Published : 1/5/2018 5:48

برطانوی تاریخ میں پہلی بارایک مسلمان وزیر داخلہ منتخب

پاکستانی نژاد ساجد جاوید برطانیہ کے وزیرداخلہ تعینات کردیے گئے اور وہ اس عہدے پر تعینات ہونے والے پہلے مسلمان ہیں۔

ولایت پورٹل:برطانوی وزیر داخلہ ایمبر رڈ نے پارلیمنٹ کے سامنے غیرقانونی تارکین وطن کی واپسی سے متعلق غلط بیانی پر عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا جس کے بعد ساجد جاوید کو اس عہدے کی ذمہ داری سونپ دی گئی ہے،وزیر داخلہ کے عہدے کے لئے ساجد جاوید مضبوط ترین امیدوار کے طور پر سامنے آئے تھے جب کہ ان کے مقابلے میں مائیکل گو اور جیرمی ہنٹ بھی عہدے پر تعیناتی کی فہرست میں شامل تھے،یاد رہے کہ ساجد جاوید 2010 میں برومزگرو سے رکن پارلیمنٹ منتخب ہوئے تھے اور وہ اس سے قبل بطور کمیونیٹیز منسٹر خدمات انجام دے رہے تھے،خیال رہے کہ اس سے قبل پاکستانی نژاد صادق خان لندن کے میئر منتخب ہوچکے ہیں،مقامی میڈیا کے مطابق ساجد جاوید برطانیہ کے یورپی یونین کا حصہ رہنے کے حق میں ہیں اور وزیر خارجہ بورس جانسن بریگزٹ کے حامی ہیں، اس لیے وزیراعظم نے کابینہ میں بریگزٹ کے حامی اور مخالفین کا توازن برقرار رکھنے کے لئے ساجد جاوید کو  عہدے پر تعینات کیا،اس سے قبل سابق وزیر داخلہ ایمبر رڈ نے اپنے عہدے سے اچانک استعفے کا اعلان کرتے ہوئے اس حوالے سے وزیراعظم تھریسامے کو فون کر کے آگاہ کیا،ایمبر رڈ کا کہنا تھا کہ وہ غیرقانونی طور پر مقیم تارکین وطن کی واپسی سے متعلق پارلیمنٹ کو گمراہ کرنے کی ذمہ داری قبول کرتی ہیں اور اسی بنا پر عہدے سے استعفیٰ دے رہی ہیں،انسانی حقوق کمیشن اور مساوات کے سابق سربراہ ٹریور فلپس نے ایمبر رڈ کے استعفے پر کہنا تھا کہ اس استعفے سے صورتحال تبدیل نہیں ہوگی، یہاں بنیادی ناانصافی یہ ہے کہ، یہ وہ گروہ ہے جو اپنے آپ کو برطانوی کہلاتا ہے۔
تسنیم




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Nov 14