Wed - 2018 Sep 26
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 193574
Published : 5/5/2018 16:58

شیعہ سنی مسلکی خلیج کو پاٹیں مسلمان:شیخ الازہر

شیخ الازہر نے کہا:دشمن آج مسلمانوں میں جنگ کے شعلے بھڑکا کر لوگوں کو یہ بتانا چاہتا ہے کہ اسلام،تلوار، جنگ،قتل و غارت اور لوگوں کو مجبور کرکے اپنے پیغام کو تھونپنے کا دین ہے جبکہ صدر اسلام میں جنگوں کا سبب مد مقابل کا کافر یا مشرک ہونا نہیں تھا بلکہ جب وہ مسلمانوں پر ہجوم کرتے تھے تب مسلمان ان پر حملہ کرکے اپنا دفاع کرتےتھے۔


ولایت پورٹل:
رپورٹ کے مطابق مصر کی معروف اسلامی یونیورسٹی الازھر کے سربراہ شیخ محمد طیب نے سنگاپور میں منعقد ایک کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ: افسوس آج کچھ جگہ لوگوں کو دین کے نام پر قتل کیا جارہا ہے جبکہ ان چیزوں کا اسلام سے دور دور کا بھی واسطہ نہیں ہے۔
انہوں اس بات پر بھی زور دیا کہ اسلام صلح و آشتی کا دین ہے، اور اگر اسلامی ممالک کے درمیان ایک جنگ کا نقارہ بج جائے تو اس میں نقصان صرف مسلمانوں کا ہی ہوگا۔
شیخ الازہر نے اسلام کے تئیں منفی پروپگنڈے کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ دشمن آج مسلمانوں میں جنگ کے شعلے بھڑکا کر لوگوں کو یہ بتانا چاہتا ہے کہ اسلام،تلوار، جنگ،قتل و غارت اور لوگوں کو مجبور کرکے اپنے پیغام کو تھونپنے کا دین ہے جبکہ صدر اسلام میں جنگوں کا سبب مد مقابل کا کافر یا مشرک ہونا نہیں تھا بلکہ جب وہ مسلمانوں پر ہجوم کرتے تھے تب مسلمان ان پر حملہ کرکے اپنا دفاع کرتےتھے۔

ایرنا



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Sep 26