Monday - 2019 January 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 193865
Published : 22/5/2018 12:46

اگر معصومین(ع) سے مأثور دعائیں نہ ہوتی تو ہمیں التجاء و مناجات کا طریقہ بھی معلوم نہ ہوپاتا:رہبر انقلاب

دعاؤں میں خدا سے ہم کلام ہونے اور مناجات کرنے کی کیفیت اور طریقہ بتایا گیا ہے۔ اس میں معین کیا گیا ہے کہ خدا سے کس طرح کی باتیں کی جانی چاہیئے، ان دعاؤں میں سے بعض جملے آئمہ معصومین علیہم السلام سے منقول و مأثور ہیں کہ اگر یہ نہ ہوتیں تو آدمی یہ واضح نہ کرپاتا کہ خدا سے کس طرح ہم کلام ہوا جائے اور کس طرح اس سے التجاء اور مناجات کی جائے۔
ولایت پورٹل: نماز میں ہر ایک رکن اور جزء کا ایک فلسفہ اور اپنی ایک حکمت ہے اور اگر نماز کو اس کے تمام شرائط اور ارکان کے ساتھ بجالایا جائے تو یہ یہ آپ کے معراج المؤمن کا مرتبہ حاصل کرلے گی اور آپ کو بام عروج پر پہنچادے گی ۔عروج یہی ہے کہ آپ نماز کے بعد اپنے باطن میں زیادہ سے زیادہ لطافت و نورانیت اور پاکیزگی کا احساس کرنے لگیں گے۔ مالی عبادات بھی اسی طرح ہیں، انواع و اقسام کی عبادتیں ہمارے لئے مواقع فراہم کرتی ہیں، لیکن رمضان کا مہینہ، سال کے دوران سب سے خاص موقع ہے، ان تیس یا انتیس دنوں میں روزانہ کی پنجگانہ نمازوں اور نوافل کے علاوہ جو کہ پڑھی جاتی ہیں، ایسی دعائیں ہیں کہ جن کو پڑھنے اور ان پر توجہ دینے سے انسانوں کی نورانیت میں مزید اضافہ ہوجاتا ہے۔ ان دعاؤں کو ہمارے اختیار میں قرار دیا گیا ہے۔ ان میں خدا سے ہم کلام ہونے اور مناجات کرنے کی کیفیت اور طریقہ بتایا گیا ہے۔ اس میں معین کیا گیا ہے کہ خدا سے کس طرح کی باتیں کی جانی  چاہیئے، ان دعاؤں میں سے بعض جملے آئمہ معصومین علیہم السلام سے منقول و مأثور ہیں کہ اگر یہ نہ ہوتیں تو آدمی یہ واضح نہ کرپاتا کہ خدا سے کس طرح ہم کلام ہوا جائے اور کس طرح اس سے التجاء اور مناجات کی جائے۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2019 January 21