Wed - 2018 Oct. 24
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 195688
Published : 9/10/2018 19:49

رہبر انقلاب کی نظر میں امام حسین(ع) کے پیغام کی تبلیغ میں جناب زینب و امام سجاد(ع)کی کوششیں

یہ مقصد حسینی، حقیقی اور حسینی دین کے احیاء اور حیات دوبارہ کے لئے نہایت ہی لازمی تھا، البتہ امام حسین علیہ السلام کے لئے اجر الٰہی اپنی جگہ پر محفوظ تھا اس واقعہ کو خاموشی کے پردے میں رکھا جاسکتا تھا لیکن امام سجاد علیہ السلام نے اس واقعہ کے تیس برس کی اپنی زندگی کے دوران، ہر مناسبت کے موقع پر نام حسین(ع) خون حسین اورآپ کی شہادت کے موضوع کولوگوں کے درمیان پیش کرکے ان کے ذہنوں میں زندہ رکھنے کی کوشش کی؟

ولایت پورٹل: شہادت اور ایثار کا مسئلہ کبھی پرانا ہونے والا نہیں ہے، یہ ایک معاشرے کی دھڑکتی ہوئی نبض ہے کہ جس سے کچھ لوگ غافل ہیں۔ یہ جو آپ دیکھتے ہیں کہ کچھ لوگ اپنے قلم و بیان اور اقدامات کے ذریعہ منفی اور ناشکری پرمبنی نظریات پیش کرتے ہیں۔ ایثار و شہادت کے مسئلہ سے ان کی غفلت کی نشاندہی کرتا ہے۔ وہ یہ بات سمجھنے سے قاصر ہوتے ہیں کہ کسی قوم و ملک کے لئے ایثار و شہادت کے احترام کا ملحوظ رکھنا اور اس کی حفاظت و نگہداشت کس قدر اہمیت رکھتی ہے۔
آپ ملاحظہ کریں کہ حسین بن علی علیہ السلام کا خون مطہر کربلا کی ریگزار گرم پر غریب الوطنی کے عالم میں بہا دیاگیا، لیکن اس کے بعد امام سجاد علیہ السلام اور جناب زینب سلام اللہ علیہا کے کاندھوں پرجو سب سے بڑی ذمہ داری تھی کہ اس پیغام کو دنیا کے مختلف علاقوں میں پہنچائیں، یہ مقصد حسینی، حقیقی اور حسینی دین کے احیاء اور حیات دوبارہ کے لئے نہایت ہی لازمی تھا، البتہ امام حسین علیہ السلام کے لئے اجر الٰہی اپنی جگہ پر محفوظ تھا اس واقعہ کو خاموشی کے پردے میں رکھا جاسکتا تھا لیکن امام سجاد علیہ السلام نے اس واقعہ کے تیس برس کی اپنی زندگی کے دوران، ہر مناسبت کے موقع پر نام حسین(ع) خون حسین اورآپ کی شہادت کے موضوع کولوگوں کے درمیان پیش کرکے ان کے ذہنوں میں زندہ رکھنے کی کوشش کیوں کی؟
کچھ لوگ یہ سوچتے ہیں کہ یہ کام بنی امیہ سے انتقام لینے کی خاطر انجام پایا حالانکہ اس کے بعد بنی امیہ کا خاتمہ ہوچکا تھا، امام سجاد علیہ السلام ریّان بن شبیب کو اباعبداللہ(ع) کے مصائب پڑھنے اور بیان کرنے کی تأکید کیوں کرتے ہیں جبکہ اس وقت بنی امیہ کا وجود نہ تھا، ان کا سلسلہ نسب تباہ و برباد ہوچکا تھا؟ یہ سب اس لئے تھا کہ ان کا نام، ان کی راہ، ان کا خون، ان کا علم، اسلامی مقاصد کی سمت میں گامزن ان کی حرکت پائیدار اور اٹھایا گیا پرچم، ہمیشہ برافراشتہ و سربلند رہے جو کہ اب تک برا فراشتہ ہے اور اس نے اپنی ہدایتوں کا سلسلہ ہنوز جاری رکھا ہے۔




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Oct. 24