Wed - 2018 Dec 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 195766
Published : 14/10/2018 7:49

ذاکر نائیک کی جائداد ضبط کرنے کا حکم

عدالتی فیصلے میں ذاکر نائیک کے ممبئی میں 4 فلیٹ اورایک دکان ضبط کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔
ولایت پورٹل:ہندوستانی ذرائع کی رپورٹ کے مطابق عدالتی فیصلے میں ذاکر نائیک کے ممبئی میں 4 فلیٹ اورایک دکان ضبط کرنے کا حکم دیا گیا ہے،ذاکر نائیک کی این جی او پر غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کا الزام ہے اورہندوستانی عدالت نے ذاکر نائیک پرجون 2017 میں فردجرم عائدکی تھی،واضح رہے کہ جولائی 2016 کے ڈھاکا دھماکے میں 22 افراد جاں بحق ہوئے تھے اور اس دہشت گرد حملے کے ملزمان نے ذاکر نائیک سے متاثر ہونے کا دعویٰ کیا تھا،ذاکر نائیک ان دنوں مستقل رہائشی کے طور پر ملائیشیا میں مقیم ہیں،واضح رہے کہ ڈاکٹر ذاکر نائیک پیغمبر اسلام ؐ اور اولیاء کرام کے خلاف بھی متعدد بار اپنی زبان کھول چکے ہیں وہ بھارت میں وہابی گمراہ کن اور دہشت گردانہ نظریہ کے فروغ میں بڑی شد و مد کے ساتھ مصروف رہے ہیں،نام نہاد اسلامی اسکالر ذاکر نائیک اسلام کے نام پر اسلام کی بیخ کنی صلیبی رسم و رواج کو فروغ دے رہے ہیں ان کے گلے میں لٹکتی ٹائی اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ وہ غیر اسلامی علائم اور نشانات کو اسلامی اسکالر کے نام پرعملی طور پر فروغ دے رہے ہیں،خیال رہے کہ ذاکر نائیک کو سعودی عرب سے بڑے پیمانے پر امداد مل رہی ہے۔
تسنیم



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Dec 19