Monday - 2018 Dec 10
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 196785
Published : 3/12/2018 17:33

اچھا دوست

اگر آپ صرف خوشیوں میں اس کے ساتھی رہیں گے تو لوگ اور آپ کا ضمیر آپ کو خود غرض کہے گا۔دوست وہی ہوتا ہے جو مصیبتوں اور مشکلات میں کام آئے ورنہ خوشیوں میں تو کوئی بھی انسان کے حال چال معلوم کرلیتا ہے۔نیز اپنے دوست کے لئے ہمیشہ ایک مضبوط مدافع اور قابل اعتماد دوست بن کر رہیں۔

ولایت پورٹل: قارئین کرام! انسان تنہا زندگی نہیں گذار سکتا لہذا زندگی میں کسی دوست کا وجود ضرور ہوتا ہے،یہ ایک انسانی و اجتماعی ضرورت ہے اور دینی نقطہ نگاہ سے بھی انسان کو ہمیشہ ایک ہمدم و مونس کی ضرورت پڑتی ہے اور ایک مسلمان کے لئے دوست بننے اور ہونے کا اصلی سبب عاطفی و جذباتی ضرورت ہے،اچھا دوست وہ ہوتا ہے کہ جو زندگی کی تمام سختیوں میں انسان کے ساتھ کھڑا رہے البتہ دوست ایک ایسا لفظ ہے جو ہر ایک کے لئے ایک الگ معںیٰ رکھتا ہے ،اچھا دوست ثابت ہونا ہر ایک کے بس کی بات نہیں ہوتی لیکن کسی پر اپنی دوستی کو ثابت کرنے کے لئے وقت کا خرچ کرنا قطعی طور پر ایک اہم امر ہے۔اگر کسی میں یہ صفات پائے جاتے ہیں تو وہ ایک اچھا دوست ثابت ہوسکتا ہے:
وفاداری
رفاقت و دوستی کی سب سے پہلی شرط وفاداری ہے چنانچہ روایات میں آیا ہے کہ دوستی میں کسی سے ایسا وعدہ مت کیجئے جسے آپ پورا نہ کرسکیں،چونکہ اگر آپ کا وعدہ مسلسل کئی بار جھوٹا ثابت ہوگیا تو آپ کی دوستی قابل اعتبار نہیں رہ جائے گی،اور اگر آپ کسی بھی مجبوری کی وجہ سے اپنی بات پر اٹل نہ رہے تو آپ معذرت خواہی کو فراموش مت کیجئے۔
اور دوستی کے سلسلہ میں وفاداری کا ایک تقاضہ یہ بھی ہے کہ آپ اپنے دوست کی نسبت لوگوں کی باتوں پر قطعی طور پر کان نہ دھریں اور ان کی منفی باتیں آپ کو اس کی طرف سے بد ظن نہ بنادیں،چنانچہ آپ اپنے عہد دوستی کو ہمیشہ نبہاتے رہیں۔
دوست  ایک مضبوط پناہ گاہ
ایک دوست کی دوسری برجستہ صفت یہ ہوتی ہے کہ وہ  اپنے دوست کا سب سے بڑا حامی و پشت پناہ ہوتا ہے،اور خاص طور پر ایسے وقت میں کہ جب آپ کے دوست کو آپ کی حمایت کی اشد ضرورت ہو۔اور آپ اس طرح سچے دل سے اس کی حمایت کریں کہ آپ کے دوست کو یہ احساس ہوجائے کہ آپ بڑے سے بڑے مشکل وقت میں بھی اس کا ساتھ نہیں چھوڑیں گے۔
اگر آپ صرف خوشیوں میں اس کے ساتھی رہیں گے تو لوگ اور آپ کا ضمیر آپ کو خود غرض کہے گا۔دوست وہی ہوتا ہے جو مصیبتوں اور مشکلات میں کام آئے ورنہ خوشیوں میں تو کوئی بھی انسان کے حال چال معلوم کرلیتا ہے۔نیز اپنے دوست کے لئے ہمیشہ ایک مضبوط مدافع اور قابل اعتماد دوست بن کر رہیں۔
دوست کی طرف خصوصی توجہ
اگر آپ یہ چاہتے ہیں کہ آپ کی دوستی ہمیشہ سلامت رہے تو آپ اس کی باتوں کو غور سے سنیئے،اور اس کی خواہشوں کا احترام کیجئے، چونکہ قابل و لائق اعتماد شخص کی باتوں کو سننا سکون کا سبب بنتا ہے،اچھے دوست گشادہ روئی، اور ایک دوسرے کی حمایت کرکے ایک دوسرے کا احترام کرتے ہیں،اگرچہ یہ بھی ممکن ہے کہ آپ کے دوست کی باتیں آپ کی نظر میں بور کرنے والی ہوں لیکن آپ اس کا احترام ملحوظ رکھیئے،ہمیشہ اس کے مددگار بنے رہیئے۔
دوستی کی سب سے بڑی آفت جھوٹ
اگر آپ یہ چاہتے ہیں کہ آپ ایک اچھے دوست ثابت ہوں اور لوگ آپ کی باتوں پر اعتماد کریں، تو آپ اپنے دوستوں کے احساسات اور جزبات کی قدر کرنے میں ہمیشہ سچائی کا مظاہرہ کرتے رہیں،جب آپ سچے ہونگے دوستوں سے آپ کا رابطہ مزید محکم ہوگا۔
اور کبھی دوست سے جھوٹ نہ بولیئے،اور ہمیشہ اس چیز کو گرہ سے باندھ لیجئے کہ جھوٹ ویسے تو برا ہے ہی لیکن دوستی کے معاملہ میں یہ زہر ہلاہل کا کام کرتا ہے چونکہ جب آپ ایسی شخصیت کے طور پر پہچانے جائیں کہ جو جھوٹ نہیں بولتا تو دوسرے بھی آپ کو جھوٹ بولنے پر مجبور نہیں کرسکتے،پس آپ خدائے قدیر کی بے انتہا قدرت اور اس کی ذات پر توکل کرتے ہوئے آج ہی سے یہ عہد کرلیجئے کہ کبھی جھوٹ نہیں بولیں گے۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Dec 10