Thursday - 2018 Dec 13
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 196837
Published : 6/12/2018 9:26

معاشرتی برائیوں اور مشکلات کی بڑی وجہ یہ ہے کہ نماز کی حقیقت اور اہمیت کو اجاگر نہیں کیا گیا جو انسان کو جھنجھوڑکر بیدار کرتی ہے:رہبر معظم

رہبر معظم نے فرمایا کہ اگر نماز کو خشوع و خضوع سے ادا کیا جائے تو یہ معاشرے کو زبان و عمل کے لحاظ سے بھلائی اور صداقت کی جانب لے جاتی ہے اور اسے کمال عطا کرتی ہے ۔

ولایت پورٹل:مشرقی ایران کے شہر سمنان میں منعقد ہونے والی سالانہ آل ایران نماز کانفرنس کے نام رہبر معظم  آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے اپنے پیغام میں فرمایا ہے کہ سالانہ نماز کانفرنس کا انعقاد ایک جانب ایسے فریضے کی اہمیت کی نشانی ہے جو دیگر اعمال اور فرائض میں روح پھونک کر انہیں کار آمد بنا سکتا ہے اور دوسری جانب ان لوگوں کو نماز کی حقیقت سمجھانے میں ایک بڑی خدمت ہے جو اس ہدیہ الہی یعنی نماز کے حق کو نہیں سمجھتے اور اس کے تعلق سے سہل انگاری یا غفلت سے کام لیتے ہیں،آپ نے فرمایا کہ اگر نماز کو خشوع و خضوع سے ادا کیا جائے تو یہ معاشرے کو زبان و عمل کے لحاظ سے بھلائی اور صداقت کی جانب لے جاتی ہے اور اسے کمال عطا کرتی ہے،رہبر معظم آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے مؤثر طریقے سے نماز کی ترویج کو ہر شخص کا اہم ترین فریضہ قرار دیتے ہوئے فرمایا کہ معاشرتی برائیوں اور مشکلات کی بڑی وجہ یہ ہے کہ نماز کی حقیقت اور اہمیت کو اجاگر نہیں کیا گیا جو انسان کو جھنجھوڑکر بیدار کرتی ہے،آپ نے اسکولوں اور مدارس کو نماز کی ترویج کا ایک اہم ترین اور موثر ترین مرکز قرار دیتے ہوئے فرمایا کہ اسکولوں کو نوجوانوں کے لیے نماز کے مرکز میں تبدیل کیا جائے کیونکہ یہ معاشرتی سلامتی کی سب سے بڑی ضمانت ہے، اس موقع پر صدر ایران نے نماز کے حوالے سے نمایاں خدمات انجام دینے والے پندرہ افراد کو توصیفی اسناد بھی عطا کیں،قابل ذکر ہے کہ ستائیسویں آل ایران نماز کانفرنس بدھ کی صبح ایران کے شہر سمنان میں شروع ہوئی۔
سحر



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Dec 13