Tuesday - 2018 Oct. 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 71829
Published : 21/3/2015 17:29

داعش نے اپنے گھرانوں کو موصل منتقل کردیا ہے

تکفیری دہشتگرد گروہ داعش نے اپنے کمانڈروں کے دو سو تیس اھل خانہ کو صوبہ صلاح الدین سے موصل میں منتقل کردیا ہے- عراق کے صوبہ دیالہ میں سیکورٹی کمیٹی کے سربراہ صادق الحسینی نے اس خبر کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے پاس موثق اطلاعات ہیں کہ تکفیری دہشتگرد گروہ داعش نے عراقی فورسز کے لبیک یا رسول اللہ آپریشن سے دو روز قبل اپنے کمانڈروں کے اھل خانہ کو صلاح الدین سے موصل منتقل کردیا ہے- عراقی فوجیوں کا یہ آپریشن صوبہ صلاح الدین کو دہشتگردوں سے پاک کرنے کی غرض سے انجام پارہا ہے- انہوں نے کہاکہ داعش نے عرب اور غیر عرب سفاک دہشت گردوں کے گھرانوں کو موصل منتقل کردیا ہے- صادق الحسینی نے کہا کہ داعش کو یقین ہوچکا تھا کہ وہ صوبہ صلاح الدین کو اس سے زیادہ اپنے کنٹرول میں نہ نہیں رکھ سکتی لھذا اس نے اپنے دہشتگردوں کو نینوا فرار کرنے کا مشورہ دیا تھا- صوبہ دیالہ کی سیکورٹی کمیٹی کے سربراہ نے کہا ہے کہ صلاح الدین میں داعش کے مجرمانہ اقدامات نہایت بھیانک اور المناک ہیں اور ہم ان مظالم کو انسانی حقوق عالمی اداروں اور عرب تنظیموں کے ریکارڈ میں لانے کی کوشش کر رہے ہیں- بعض سیکورٹی ذرایع نے کہا تھا کہ داعش کے بعض غیر ملکی کمانڈر انپے اھل خانہ کے ہمراہ عراقی فوج کے تکریت میں داخل ہونے کے موقع پر ہی فرار ہوگئے تھے- یہ بھی اطلاعات موصول ہوئی ہیں کہ داعش نے فرار کرنے والے بعض افراد کو قتل کردیا ہے- صوبہ کرکوک کے ایک مقامی ذریعے نے بتایا ہے کہ عراقی فوج کے الرشاد علاقے کی طرف بڑھنے کے موقع پر داعش کے دسیوں دہشتگرد شہر حویجہ سے فرار ہوگئے ہیں- الرشاد کا علاقہ کرکوک کے جنوب مغرب میں واقع ہے- اس ذریعے نے کہا ہے کہ داعش کے عرب اور غیر ملکی کمانڈروں نے اپنے گھرانوں کے ساتھ نینوا میں پناہ لے لی ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Oct. 16