شنبه - 2019 مارس 23
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 72064
تاریخ انتشار : 1/4/2015 19:42
تعداد بازدید : 26

یمن کا بحران: آل سعود کی وحشیانہ جارحیت جاری

یمن کے نہتے عوام پر آل سعود اور اسکے جیرہ خواروں کی جارحیت میں شہید ہونے والے افراد خاص طور سے بچوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے-
یمن سے موصولہ اطلاعات کے مطابق آل سعود اور اسکے اتحادی جارح ممالک کے حملوں میں اب تک باسٹھ بچے شہید ہوچکے ہیں- یمن پر آل سعود اور اسکے اتحادیوں کی وحشیانہ بمباری سے دنیا میں ایک بار پھر بچوں کے قتل عام کا مشاہدہ کیا جارہا ہے- اس سے قبل صیہونی حکومت نے غزہ پٹی پر پچاس روزہ جارحیت میں بچوں کا قتل عام کیا تھا- ادھر یمن میں عوامی انقلابی تحریک انصاراللہ اور فوج کی پیش قدمی جاری ہے- العالم کی رپورٹ کے مطابق یمن کی فوج اور عوامی کمیٹیوں نے منگل کو عدن کے انٹرنیشنل ہوائی اڈے پر مکمل طرح سے کنٹرول حاصل کرلیا جبکہ تحریک انصاراللہ نے ایک اسٹراٹیجیک فوجی اڈے کو بھی اپنے کنٹرل میں لے لیا ہے- یمن کے مقامی حکام کے مطابق تحریک انصاراللہ نے بحیرہ احمر میں باب المندب کے قریب ایک اسٹراٹیجک فوجی اڈے پر کنٹرول حاصل کرلیا ہے- اطلاعات کے مطابق یمن کے جنوب مغربی صوبے تعز کے علاقے دباب میں یمن کی فوج کے سترھویں بکتر بند ڈویژن نے انصاراللہ کا اس فوجی اڈے میں استقبال کیا- یمن سے موصولہ اطلاعات کے مطابق آل سعود کے جارح طیاروں نے صوبہ حجہ میں حرض اور المرزق کو ملانے والی شاہراہ کو نشانہ بنایا- مبصرین کا کہنا ہے کہ آل سعود، یمن میں اپنی سیاسی ناکامیوں کا بدلہ لینے کے لئے نہتے عوام کو جارحیت کا نشانہ بنارہی ہے- ادھر اقوام متحدہ نے یمن کے شمالی علاقے میں پناہ گزینوں کے کیمپ پر آل سعود کے حملوں کو عالمی قوانین کی خلاف ورزی قرار دیا ہے- ارنا کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ اس حملے میں چالیس افراد جاں بحق ہوئے تھے لہذا پناہ گزین کیمپ پر حملے کرنے والوں کو جواب دہ ہونا پڑے گا- اقوام متحدہ کے ترجمان فرحان حق نے کہا ہے کہ عام شہریوں پر حملے بند ہونے چاہیئں- قابل ذکر ہے امدادی تنظیموں نے کہا ہے کہ مرزق نامی پناہ گزینوں کے کمیپ پر آل سعود اور اس کے پٹھووں کے حملوں میں درجنوں افراد جاں بحق اور تقریبا دو سو سے زائد زخمی ہوئے ہیں جن میں دسیوں زخمیوں کی حالت نازک بتائی جاتی ہے- اقوام متحدہ نے یہ بھی کہا ہےکہ آل سعود کی جارحیت کی وجہ سے یمن کے عوام کو امداد پہنچانے میں مشکل پیش آرہی ہے اور یمنی عوام امداد حاصل کرنے سے محروم ہوچکے ہیں- بین الاقوامی امدادی تنظیموں نے کہا ہے عدن اور صنعا کے انٹرنیشنل ہوائی اڈوں کا بند رہنا ہی، سب سے بڑی مشکل ہے جس کی وجہ سے امداد نہیں پہنچائی جاسکتی ہے- یاد رہے کہ آل سعود اور اسکے پٹھو ممالک، چھے دنوں سے یمن کے نہتے عوام پر وحشیانہ حملے جاری رکھے ہوئے ہیں- سعودی عرب اس سے پہلے بھی کئی مرتبہ یمن پر حملے کرچکا ہے لیکن اسے سخت ہزیمت اٹھانے کے علاوہ کچھ نہیں ملا ہے- ایک اور رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ یمن کے صوبے صعدہ میں امریکی ڈرون طیاروں کا مشاہدہ کیا گیا ہے-


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :