شنبه - 2019 مارس 23
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 72090
تاریخ انتشار : 2/4/2015 22:13
تعداد بازدید : 15

امریکی وزیر جنگ کی دھمکی پر جنرل جزائری کا سخت ردعمل

اسلامی جمہوریہ ایران کی مسلح افواج کے ڈپٹی کمانڈر جنرل جزائری نے کہا ہے کہ فوجی کاروائی ایسا آپشن نہیں جو صرف امریکہ کے ہی پاس ہو۔
جنرل جزائری نے امریکی وزیر جنگ کے حالیہ بیان پر سخت ردعمل ظاہر کیا جس میں ایشٹن کارٹر نے کہا تھا کہ اگر ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے مابین ایک اچھا سمجھوتہ نہ ہوا تو ایران کے خلاف ہر آپشن میز پر باقی رہے گا۔ جنرل جزائری نے بھی ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ بعض امریکی حکام یہ سمجھتے ہیں کہ فوجی کاروائی کا آپشن، صرف ان کے ہی پاس ہے حالانکہ وہ سخت غلط فہمی کا شکار ہیں۔ جنرل جزائری نے کہا کہ اس وقت ایران کے پاس بھی متعدد آپشن موجود ہیں جنھیں ہم اپنے قومی مفادات اور دنیا کے مظلوموں کی دفاع کی غرض سے استعمال کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ ایران کی مسلح افواج کے ڈپٹی کمانڈر نے کہا کہ حالیہ برسوں کے دوران امریکہ، جب بھی کسی جنگ میں ملوث ہوا ہے تو اسے شکست کا منہ دیکھنا پڑا ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایران، آج بھی امریکا کو دنیا کا سب زیادہ نا قابل بھروسہ ملک سمجھتا ہے۔


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :