Saturday - 2018 Nov 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 73320
Published : 20/4/2015 19:19

ایس 300 کی فراہمی، اسرائیل کے منہ پر طمانچہ

صیہونی حکومت، اگرچہ روس کے قریب ہونے کی کوشش کر رہی تھی لیکن ایس تھری ہنڈریڈ اینٹی میزائل سسٹم ایران کے حوالے کر نے کا ولادیمیر پوتین کا فیصلہ نتن یاھو کے لئے بڑی شکست سمجھا جاتا ہے- صیہونی اخبار یروشلم پوسٹ نے اپنی ایک رپورٹ میں روس سے قریب ہونے کی صیہونی حکومت کی پالیسی کا جائزہ لیتے ہوئے لکھا ہے کہ ایران کو ایس تھری ہنڈریڈ اینٹی میزائل سسٹم دیا جانا نتن یاھو کے منہ پر زوردار طمانچہ تھا- دوسری جانب روسی صدر ولادیمیر پوتین نے یوکرین کو مہلک ہتھیار بیچنے کے بارے میں اسرائیل کو خبردار کیا تھا- پوتین نے اس سلسلے میں کہا کہ یوکرین کو ہتھیار بیچ کر اسرائیل اپنے مقاصد حاصل نہیں کر پائے گا بلکہ مزید لوگوں کے مرنے کے باعث بنے گا اور موجودہ حقائق میں کوئی تبدیلی پیدا نہیں کر پائے گا- پوتین کے یہ بیانات، ایران کو برسوں بعد ایس تھری ہنڈریڈ اینٹی میزائل دینے کے فیصلے پر ردعمل میں یوکرین کو بعض جدید ترین ہتھیار بیچنے کی اسرائیلی کوشش کے حوالے سے شائع ہونے والی خبروں کے بعد سامنے آئے ہیں۔ اگرچہ صیہونی حکومت نے اس معاملے پر اپنے غصے کا باقاعدہ اظہار نہیں کیا ہے لیکن نتن یاھو نے اس سلسلے میں فون پر ولادیمیر پوتین سے بات کی ہے جس میں نتن یاھو نے ایران کو ایس تھری ہنڈریڈ میزائل سسٹم کی فروخت کے معاہدے پر عمل درآمد کے فیصلے پر اعتراض کیا-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Nov 17