Saturday - 2018 Nov 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 73470
Published : 22/4/2015 21:14

جنگ بندی کے اعلان کے باوجود صنعا پر فضائی حملہ

سعودی عرب کے جنگی طیاروں نے یمن پر جارحیت بند کیے جانے کے اعلان کے دو گھنٹے بعد منگل اور بدھ کی درمیانی شب ایک بار پھر صنعا پر بمباری کی ہے۔ ارنا کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے جنگی طیاروں نے سعودی حکام کی جانب سے جنگ بندی کے اعلان کے باوجود، منگل اور بدھ کی درمیانی شب ایک بار پھر صنعا کے مختلف علاقوں کو نشانہ بنایا۔ اس رپورٹ کے مطابق سعودی حکام نے اعلان کیا کہ یمن کے خلاف اپنے ہوائی حملے مکہ مکرمہ کے وقت کے مطابق منگل اور بدھ کی درمیانی شب بارہ بجے روک دیں گے لیکن اس کے دو گھنٹے کے بعد ہی ایک بار پھر شمالی صنعا میں واقع الاستقبال کیمپ پر ہوائی حملہ کر دیا۔ مقامی ذرائع نے اعلان کیا ہے کہ اس حملے کے بعد شمالی صنعا کے علاقے ضلاع ہمدان میں شدید دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔ سعودی عرب اور اس کےاتحادی جنگی طیاروں نے گذشتہ ستائیس دنوں کے دوران یمن پر دو ہزار سے زائد فضائی حملے کئے اور اس ملک کی بہت سی بنیادی تنصیبات اور رہائشی مکانات کو تباہ کردیا- ان حملوں میں، جو امریکہ کے زیر نگرانی اور اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل کی تائید اور عالمی اداروں کی خاموشی کے زیر سایہ انجام پائے،یمن کے ہزاروں نہتے افراد خاک و خون میں غلطاں ہو گئے۔ اسلامی جمہوریہ ایران نے اس بحران کے آغاز سے ہی انسان دوستی کے تحت کوشش کی عالمی برادری کو یمن پر حملے کے نقصانات اور انسانی المیے کے بارے میں احساس دلائے اور اس سلسلے میں اس نے وسیع پیمانے پر سفارتی کوششیں انجام دیں اور اسلامی اور علاقائی ممالک کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔ اسی سلسلے میں ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے عمان کے وزیر خارجہ یوسف بن علوی سے ٹیلیفونی گفتگو میں کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اپنے چار نکاتی امن منصوبے کے تناظر میں فوجی کارروائیاں بند کرانے اور یمن کے تمام فریقوں کے درمیان مذاکرات شروع کرنے کے سلسلے میں ہر طرح کی مدد کرنے کو تیار ہے۔ ماہرین نے اس سے قبل کہا تھا کہ یمن پر سعودی عرب کے حملوں کا کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہو گا ۔ سعودی عرب نے یمن کے خلاف اپنی جنگ کے آغاز کے وقت اپنے اہداف کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس کامقصد انصاراللہ کو غیرمسلح کرنا، اسے جنوبی صوبوں خاص طور پر صنعا سے بے دخل کرنا اور مفرور اور مستعفی صدر عبد ربہ منصور ہادی کو دوبارہ اقتدار میں لانا ہے تاہم تقریبا ایک ماہ تک یمن کے خلاف جارحیت اور بربریت کا مظاہرہ کرنے کے بعد بھی وہ اپنے کسی بھی مقصد کو حاصل نہیں کر سکا اور آخر کار اپنے حملے بند کرنے پر مجبور ہو گیا۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Nov 17