دوشنبه - 2019 مارس 25
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 73821
تاریخ انتشار : 28/4/2015 19:31
تعداد بازدید : 19

تارکین وطن کو روکنا تیونس کی ذمہ داری نہیں

تیونس کے صدر نے کہا ہے کہ غیر قانونی تارکین وطن کو یورپ جانے سے روکنا اس ملک کے فرائض میں شامل نہیں ہے-
تیونس کے صدر الباجی قائد السبسی نے پیر کی رات جرمنی کے صدر یواکیم گوک کے ساتھ ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ تیونس، غیر قانونی تارکین وطن کو یورپ کے ساحلوں کی جانب جانے سے روکنے کےلئے یورپ کےساتھ تعاون کرنے کے لئے تیار ہے لیکن اس کے پاس اس کام کے لئے ضروری وسائل موجود نہیں ہیں- الباجی قائد السبسی نے مزید کہا کہ یورپ والوں کو اس بات کو سمجھنا چاہئے کہ اس مسئلے کا تعلق صرف سلامتی کے ساتھ نہیں ہے بلکہ اس کا تعلق، اجتماعی پالیسی اور ترقی کےلئے تارکین وطن کو بھیجنے والے ممالک کے ساتھ تعاون سے بھی ہے- ڈکٹیٹر قذافی کی حکومت کی سرنگونی کے بعد لیبیا میں پیدا ہونے والی بدامنی کی وجہ سے افریقہ اور مشرق وسطی سے بحیرہ روم کے راستے یورپ جانے والے تارکین وطن، لیبیا کا رخ کرتے ہیں- واضح رہے کہ جرمن صدر یواکیم گوک ایک وفد کے ہمراہ پیر کے دن تین روزہ دورے پر تیونس پہنچے ہیں-


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :