Monday - 2018 Dec 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 73919
Published : 30/4/2015 18:42

جزائر مارشل کا بحری جہازعالمی قوانین کے مطابق روکا گیا

اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کی ترجمان نے کہا ہے کہ ایران کی سمندری حدود میں "جمہوریہ جزائر مارشل" کے پرچم والے تجارتی بحری جہاز کو روکنے کا اقدام، ایران کے قوانین اور بین الاقوامی اصولوں کے مطابق انجام پایا ہے- ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق مرضیہ افخم نے ایران کی سمندری حدود میں "جزائر مارشل" کے پرچم والے تجارتی بحری جہاز کو روکنے کے بارے میں کہا کہ یہ اقدام اسلامی جمہوریہ ایران کے قوانین اور بین الاقوامی اصول و معیارات کے مطابق انجام دیا گیا ہے اور ہمیں امید ہے کہ یہ بحری جہاز اپنے ذمہ قرض کو ادا کرنے کے بعد اپنے راستے کو جاری رکھے گا- مرضیہ افخم نے یہ بات بیان کرتے ہوئے کہ اس بحری جہاز کو روکنے کا اقدام عدالت کے گزشتہ حکم اور مدعی کی درخواست پر انجام دیا گیا ہے، کہا کہ اس بحری جہاز کو ایران کی شہید باہنر بندرگاہ سے، بندرعباس منتقل کیا گیا ہے اور اس میں سوار عملے کے چوبیس ارکان کہ جن کا تعلق مختلف ممالک سے ہے، بالکل خیریت سے ہیں اور ان کو سفارتی خدمات فراہم کرنے کے سلسلے میں کوئی رکاوٹ اور پابندی نہیں ہے- موصولہ اطلاعات کے مطابق بحری جہاز کے کپتان کا تعلق بلغاریہ اور اس کے نائب کا تعلق روس سے ہے جبکہ عملے کے باقی افراد میں سے تیرہ کا تعلق میانمار، چار کا رومانیہ، ایک کا یوکرین، ایک اور کا برطانیہ اور دو کا تعلق سری لنکا سے ہے جبکہ ایک پولینڈ سے تعلق رکھتا ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Dec 17