Thursday - 2018 Nov 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 73929
Published : 1/5/2015 11:45

امریکی کانگریس کے منصوبے پر عراق کا ردعمل

عراق کی حکومت نے ملک کو تقسیم کرنے کے امریکی منصوبے کی شدید مخالفت کی ہے- المیادین ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق عراقی حکومت نے، امریکی کانگریس کی جانب سے کردوں اور سنی مسلمانوں کو حکومت کی اجازت بغیر مسلح کرنے کی حمایت کرنے اور عراق کو تقسیم کرنے کے منصوبے کی شدید مخالفت کی ہے۔ عراقی وزیر اعظم کے دفتر نے بدھ کے روز ایک بیان میں عراق کو تقسیم کرنے کے لئے امریکی کانگریس کے منصوبے کا جائزہ لئے جانے کے اقدام پر کڑی نکتہ چینی کی ہے۔ اس بیان میں کہا گیا ہے کہ عراق، کسی بھی قسم کی دوغلی پالیسی قبول نہیں کرے گا اور اس بات پر تاکید کرتا ہے کہ عراق کے کردوں اور اہلسنت مسلمانوں کو مسلح کرنے کا کوئی بھی قدم، عراقی حکومت کی اجازت کے بغیر عمل میں نہیں لایا جانا چاہیئے۔ عراق کے وزیر دفاع نے بھی عراق کے اہلسنت اور اسی طرح قبائل کو مستقل طور پر مسلح کرنے پر مبنی امریکی کانگریس کے منصوبے کی شدید مخالفت کی ہے۔ خالد العبیدی نے کہا کہ قبائل اور اہل سنت گروہوں کو مسلح کرنے کے مسئلے کا عراق کی وزارت دفاع جائزہ لے رہی ہے اور بغداد اس سلسلے میں کسی بھی قسم کی مداخلت برداشت نہیں کرے گا۔ واضح رہے کہ امریکی کانگریس کی مسلح افواج کمیٹی نے بدھ کے روز " عراق کے سنی قبائل اور پیشمرگہ ملیشیا کے ساتھ براہ راست مفاہمت اور بات چیت" کے منصوبے کی منظوری دی ہے اور اس منصوبے کی حتمی منظوری کی صورت میں عراق کی کرد پیشمرگہ ملیشیا اور سنی مسلمان، براہ راست اور عراق کی حکومت سے اجازت کے بغیر امریکی امداد حاصل کرسکیں گے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Nov 15